.

داعش کو سنجار سے نکالنے کے لیے کرد فورسز کا آپریشن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شمالی قصبے سنجار سے 'داعش' کے جنگجوؤں کو نکال باہر کرنے کے لیے کرد سکیورٹی فورسز البیشمرکہ نے جمعرات کی صبح بڑی کارروائی شروع کی ہے۔ سنجار پر داعش نے ایک برس قبل قبضہ کرلیا تھا اور ہزاروں یزیدی باشندوں کو ہلاک اور بے دخل کر دیا تھا۔

'العربیہ' نیوز چینل کے برادر چینل 'الحدث' کے نامہ نگار نے بتایا ہے کہ البیشمرکہ نے ایک کارروائی کے دوران شامی شہر الرقہ اور عراق کے شمالی شہر موصل کے درمیان زمینی رابطہ منقطع کر دیا ہے۔

کرد نیشنل کونسل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 'آزاد سنجار' کوڈ نام سے البیشمرکہ کے اس آپریشن کا مقصد بلدیہ کا محاصرہ کرنا اور داعش کے سامان رسد پہنچانے کے راستوں کا کنٹرول حاصل کرنا ہے تاکہ سنجار کو داعش کی گولہ باری سے محفوظ رکھنے کے لیے ایک بفر زون بنایا جا سکے۔

البیشمرکہ کو داعش کے خلاف اس زمینی کارروائی کے دوران امریکا کی قیادت میں اتحادی فوج کے لڑاکا طیارے فضائی کور فراہم کر رہے ہیں۔سنجار عراق اور شام میں داعش کے دو اہم مراکز ں موصل اور الرقہ کو ملانے والی مرکزی شاہراہ پر واقع ہے۔