.

پیرس حملے 'انسانی قدروں کی خلاف ورزی ہیں': عرب دنیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا بھر کی طرح عرب ملکوں نے بھی جمعہ کی شب پیرس میں بیک وقت ہونے والی دہشت گردی کی متعدد کارروائیوں میں بڑے پیمانے پر ہلاکتوں پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے ان حملوں کی شدید مذمت کی ہے۔ پیرس حملوں کی مذمت کرنے والے عرب ملکوں میں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، کویت، قطر اور مصر نمایاں ہیں۔

سعودی عرب کی وزارت خارجہ کے ذرائع نے کہا ہے کہ "مملکت دہشت گرد دھماکوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس کڑے وقت میں فرانس کے ساتھ عالمی یکجہتی کی ضرورت پر زور دیتی ہے۔"

حکومت کے ایک بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ "سعودی عرب اس امر کا اعادہ کرتا ہے کہ عالمی برادری پوری دنیا کی سلامتی اور استحکام کو نشانہ بنانے والے اس خطرناک اور تباہ کن ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے متحدہ ہو جائے۔" ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ "عالمی سلامتی کو کسی بھی بہانے سے نشانہ بنانے والوں کے خلاف جنگ کے لئے مؤثر اور مشترکہ بین الاقوامی اقدام کی ضرورت ہے۔"

درایں اثنا قطر کے وزیر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پیرس حملے تمام انسانی اور اخلاقی اقدار کی خلاف ورزی ہیں۔ پیرس میں قطری سفارتخانے کی جانب سے 'رائیٹرز' کو بھیجے گئے خالد العطیہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ "اپنے وزیر خارجہ کے توسط سے قطری حکومت پیرس حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے جس میں اتنی بڑی تعداد میں انسانی جانوں کا ضیاع ہوا۔" انہوں نے مزید کہا کہ"فرانس میں سلامتی اور استحکام کو نشانہ بنانے والے تمام اقدامات تمام انسانی اور اخلاقی اقدار کے خلاف ہیں۔"

متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زاید آل نہیان نے فرانسیسی صدر فرانسوا اولاند سے پیرس حملوں پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ شیخ خلیفہ نے فرانس میں ہونے والی دہشت گرد کارروائی کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

مصر کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے پیرس سے یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔ قاہرہ وزارت خارجہ کے ایک ذریعے نے بتایا کہ ایسے دہشت گرد حملے امن پسند ملکوں کو کمزور نہیں کر سکتے۔

کویت کے امیر شیخ صباح الصباح نے صدر اولاند کے نام تعزیتی برقیئے میں "دہشت گردی کے مجرمانہ اعمال کی شدید مذمت کی ہے۔ یہ حملے اسلام اور انسانی اقدار کی صریح خلاف ورزی ہیں۔" انہوں نے فرانسیسی عوام کے ساتھ کویت کی یکجہتی کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک فرانس کی جانب سے اپنی سیکیورٹی کو دہشت گرد حملوں سے محفوظ رکھنے کی خاطر کئے جانے والے تمام اقدامات کی حمایت کرتا ہے۔

ترک صدر رجب طیب اریردوآن نے پیرس حملوں پر دلی تعزیت کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ تمام بین الاقوامی برادری دہشت گردی کے خلاف اتفاق رائے پیدا کرے۔ اپنے مختصر ٹی وی بیان میں ترک رہنما کا کہنا تھا کہ "دہشت گردی کے نتائج سے بخوبی واقف ملک کے طور پر ہم اس ابتلا کو محسوس کر سکتے ہیں جس سے فرانس گزر رہا ہے۔"