.

کویت: داعش کے لیے اسلحہ جمع کرنے میں ملوث گینگ گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خلیجی ریاست کویت کی پولیس نے شام اور عراق سمیت دنیا کے مختلف ملکوں میں سرگرم دہشت گرد تنظیم دولت اسلامی "داعش" کو اسلحہ اور میزائل فراہم کرنے میں ملوث ایک گینگ کے کئی ارکان کو حراست میں لیا ہے۔ گرفتار کیے گئے شدت پسندوں میں کویتی، مصری، شامی لبنانی اور ایک آسٹریلوی بھی شامل ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق کویت وزارت داخلہ کے زیرانتظام محکمہ تعلقات عامہ و سیکیورٹی اطلاعات کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سیکیورٹی حکام کو دہشت گردوں کے ایک خفیہ ٹھکانے کا پتا چلا تھا۔ پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران لبنانی نژاد اسامی محمد سعید خیاط کو حراست میں لیا۔ سنہ 1975ء کو کویت میں پیدا ہونے والے اسامہ سعید خیاط کا تعلق دولت اسلامی "داعش" کے ساتھ ہے اور وہ تنظیم کی مالی اور لاجسٹک مدد کرتا رہا ہے۔

گرفتار کیے گئے دہشت گرد سے پوچھ تاچھ کے دوران کویت میں اس کے کئی دوسرے ساتھیوں کی بھی نشاندہی کی گئی اور انہیں اسلحہ اور گولہ بارود سمیت گرفتار کیا گیا ہے۔

دوران تفتیش ملزمان نے اعتراف کیا کہ انہوں ںے شام میں دہشت گردی میں ملوث تنظیم"داعش" کو NF6 نامی میزائل فراہم کیے تھے۔

گرفتار ملزم سعید خیاط نے بتایا کہ انہوں نے اسلحہ کی ایک ڈیل یوکرائن میں کی تھی جہاں سے مال بردار گاڑیوں کے ذریعے میزائل اور دیگر اسلحہ ترکی اور وہاں سے شام پہنچایا گیا۔

ملزم نے بتایا کہ انہوں نے "داعش" کے نام کی مہریں بھی تیار کر رکھی تھیں۔ شام بھجوائے گئے اسلحہ پر وہ مہریں ثبت کی جاتی رہی ہیں۔

پولیس نے سعید خیاط کی نشاندہی پر یوکرائن میں اسلحہ کا کاروبار کرنے والے شامی نژاد عبدالکریم محمد سلیم، حازم محمد خیر طرطری، مصری نژاد وائل محمد احمد بغدادی، کویتی راکان ناصر منیر العجمی اور شامی نژاد عبدالناصر محمود الشواء کو بھی اسلحہ اور میزائلوں سمیت گرفتار کر لیا۔

دہشت گردوں نے اپنے بعض ایسے ساتھیوں کی بھی نشاندہی کی ہے جو شام میں دہشت گردوں کو اسلحہ فراہم کرتے رہے ہیں تاہم وہ اس وقت ملک سے باہر ہیں۔ ان میں آسٹریلیا کے ھشام محمد ذھب، شام کے ولید ناصیف، ربیع ذھب اور محمد حکمت طرطری شامل ہیں۔ مذکورہ تمام جنگجو دہشت گردوں کو اسلحہ اور میزائل فراہم کرنے میں ملوث رہے ہیں۔