.

الخلیل: چاقو حملے میں دو یہودی زخمی ،فائرنگ سے فلسطینی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر الخلیل میں ایک فلسطینی نے مبینہ طور پر ایک اسرائیلی فوجی اور ایک شہری کو چاقو گھونپ کر زخمی کردیا ہے جبکہ اسرائیلی فوجیوں نے اس فلسطینی کو موقع پر ہی گولی مار کر موت کی نیند سلا دیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کا کہنا ہے کہ فلسطینی کے چاقو حملے میں شہری کو معمولی زخم آیا ہے اور دوسرے کا بھی زخم جان لیوا نہیں ہے۔اسرائیلی ریڈیو کی اطلاع کے مطابق چاقو کے وار سے زخمی ہونے والا اسرائیلی شہری قوم پرست مذہبی جماعت جیوش ہوم کی سابق رکن پارلیمان اوریٹ سٹرک کا بیٹا ہے۔اس خاتون سیاست دان نے ریڈیو کو بتایا ہے کہ ان کا بیٹا معمولی زخمی ہوا ہے۔

فلسطین کے سکیورٹی ذرائع نے مبینہ حملہ آور کی شناخت عبدالرحمان مسودہ کے نام سے کی ہے۔اس کی عمر اکیس برس تھی۔وہ سوموار کو الخلیل میں شہید ہونے والے ایک اور فلسطینی نوجوان کا کزن تھا۔اس فلسطینی کو بھی اسرائیلی فوجیوں نے مبینہ چاقو حملے کے بعد گولی مار کر شہید کردیا تھا۔

الخلیل میں گذشتہ دوماہ سے فلسطینیوں اور اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے درمیان تشدد کا سلسلہ جاری ہے اور اسرائیلی فوجی مبینہ چاقو حملوں کے بعد متعدد فلسطینیوں کو گولی مار کر شہید کر چکے ہیں۔الخلیل شہر کے وسط میں یہودی آباد کاروں کو بسایا گیا ہے اور وہ اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے کڑے پہرے میں رہ رہے ہیں اور اس شہر میں فلسطینیوں اور یہود آباد کاروں کے درمیان سخت کشیدگی پائی جارہی ہے۔

درایں اثناء غربِ اردن کے شمالی قصبے طباس میں اسرائیلی فوجیوں نے ایک فلسطینی کو گرفتار کرنے کے لیے چھاپہ مار کارروائی کی ہے۔اس دوران ان کی فلسطینیوں کے ساتھ جھڑپ ہوئی ہے اور انھوں نے فائرنگ کی ہے اور اشک آور گیس کے گولے پھینکے ہیں جس سے تین افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

اسرائیلی فوجیوں نے جمہوری محاذ برائے آزادیِ فلسطین کے ایک رکن ایاد مسلمانی کو گرفتار کر لیا ہے۔اسرائیلی فوج نے اس کارروائی کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ اس نے ''مظاہرین'' کو منتشر کرنے کے لیے براہ راست فائرنگ کی تھی۔تاہم اس نے واقعے کی مزید تفصیل نہیں بتائی ہے۔

واضح رہے کہ مقبوضہ مغربی کنارے اور بیت المقدس میں اسرائیلی سکیورٹی فورسز کی یکم اکتوبر سے جاری کارروائیوں میں ایک سو تیرہ فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔ان میں نصف کے بارے میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ وہ مبینہ طور پر حملہ آور تھے اور ان کے چاقو حملوں اور فائرنگ سے سترہ اسرائیلی ہلاک ہوئے ہیں۔ان کے علاوہ اریٹریا کا ایک شہری اور ایک امریکی بھی اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے ہلاک ہوگیا تھا۔