.

عراقی فوج کے حملے میں 15 داعشی جنگجو ہلاک

حملے میں البغدادی کا معاون کمانڈر زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک فضائی حملے کے نتیجے میں شدت پسند تنظیم دولت اسلامی ’’داعش‘‘ کے پندرہ جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں جب کہ حملے میں داعشی خلیفہ ابو بکرالبغدادی کے قریبی ساتھی اور ان کے معاون زخمی ہوئے ہیں۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق انٹیلی جنس کی معلومات کی بنیاد پر شام اور عراق میں سفرکرنے والے داعشی کمانڈر ابو علی الانباری کی نقل وحرکت کی نشاندہی کی گئی تھی جس کے بعد شام کی سرحد کے قریب الجزیرہ کے مقام پر ابو علی الانباری کے قافلے کو نشانہ بنایا گیا جس میں کم سے کم پندرہ داعشی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔ اطلاعات ہیں کہ الانباری حملے میں زخمی ہوئے ہیں۔

ذرائع کے مطابق عراقی فوج کے حملے میں ہلاک ہونے والے داعشی جنگجوئوں میں ابو امنہ المصری المعروف السید بھی شامل ہے۔ المصری داعشی جنگجو ابو ایوب المصری اور ابو ھمام الزبیدی کے ساتھ اسپائکر حملے میں ہلاک ہوچکا ہے۔ مقتولین میں وسام الزبیدی المعروف ابو نبیل لیبیا فرار ہوگیا تھا جوکچھ عرصہ پیشتر واپس عراق کے علاقہ صلاح الدین میں لوٹ آیا تھا جہاں اس نے دوبارہ تنظیمی سرگرمیاں سنھبال لی تھیں۔

دیگر جنگجوئوں میں محمد حمید العسافی المعروف ابو ھاجر العسافی بشیر شہاب الجشعمی اور ابو عادل العش بھی شامل ہیں۔ ابو ھاجر العسافی بھی ابو بکر البغدادی کے قریبی ساتھیوں میں شمار ہوتا ہے۔