.

کرنل قذافی کے بیٹے ہانیبال لبنان میں اغوا کے بعد رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان میں سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ لیبیا کے سابق حکمران معمر قذافی کے بیٹے ہانیبال قذافی کو ایک مسلح گروہ کی جانب سے مختصر وقت کے لیے مغوی بنانے کے بعد چھوڑ دیا گیا ہے۔

اس سے قبل لبنانی ٹی وی پر نشر کی جانے والی ایک ویڈیو میں وہ سنہ 1978 میں معروف شیعہ عالم موسیٰ الصدر کے لاپتہ ہونے کے بارے میں مزید معلومات کی اپیل کرتے دکھایا گیا تھا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ہانیبال قذافی کو لبنان کے شہر بعلبک میں رہا کیا گیا اور بیروت روانہ کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ موسیٰ الصدر کا شمار بیسویں صدر کے معروف ترین شیعہ عالموں میں ہوتا ہے اور وہ سنہ 1978 میں دو دیگر افراد کے ہمراہ لیبیا کے دورے کے دوران لاپتہ ہوگئے تھے۔ معمر قذافی نے ان کی گمشدگی میں ملوث ہونے سے الزامات کو مسترد کیا تھا جبکہ بہت سارے دیگر افراد کا خیال تھا کہ ایسا انہی کے کہنے پر کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ 40 سالہ ہانیبال قذافی کو سنہ 2012 میں ان کی والدہ اور بہن کے ہمراہ اومان میں پناہ دی گئی تھی۔جبکہ ان کے والد معمر قذافی کو سنہ 2011 میں ابھرنے والی بغاوت کے بعد اقتدار سے ہٹا دیا گیا تھا۔ تاحال یہ واضح نہیں ہے کہ ہنیبال قذافی کتنے عرصے سے لبنان میں مقیم تھے۔ اومان میں قیام کے دوران وہ اپنی بہن عائشہ اور والدہ صفیہ کے ہمراہ گھر میں نظر بند تھے۔