شام: شہری علاقوں پر فضائی حملوں میں 45 افراد ہلاک

دمشق اور دوما میں مارٹر بموں سے اسکول پرنسپل اور متعدد طلبہ مارے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے دارالحکومت دمشق اور اس کے نواح میں واقع باغیوں کے زیر قبضہ قصبے دوما میں اسکولوں پر فضائی اور میزائل حملوں میں 45 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ان میں ایک اسکول کے پرنسپل اور دو بچے بھی شامل ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ دمشق سے پندرہ کلومیٹر شمال مشرق میں واقع قصبے دوما پر نامعلوم لڑاکا طیاروں نے بمباری کی ہے۔ان کے علاوہ شامی فوج نے اس علاقے اور مشرقی غوطہ میں زمین سے زمین پر مار کرانے والے میزائل فائر کیے ہیں۔

شامی آبزرویٹری نے ملک میں موجود اپنے نیٹ ورک کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ مزاحمت کاروں نے اتوار کو چالیس مارٹر بم فائر کیے ہیں جو دمشق کے مشرقی حصوں میں گرے ہیں۔ان دھماکوں میں ایک بچہ جاں بحق اور متعدد افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کی اطلاع کے مطابق مارٹروں کے حملے میں تین شہری ہلاک اور کم سے کم تیس زخمی ہوگئے ہیں۔یہ مارٹر دمشق کے رہائشی علاقے میں گرے تھے۔مقتولین اور مجروحین میں زیادہ تر اسکولوں کے طلبہ ہیں۔

واضح رہے کہ شامی فوج کے لڑاکا طیارے دوما میں باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں پر حالیہ مہینوں کے دوران متعدد مرتبہ فضائی حملے کر چکے ہیں۔چند ہفتے قبل دوما کے ایک مصروف بازار پر بمباری سے ایک سو سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔دوما اور اس کے نواحی علاقوں پر احرار الشام اور دوسرے باغی گروپوں کا قبضہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں