اسرائیلی شہریوں پر حملے کی کوشش میں فلسطینی لڑکی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی حکام کے مطابق مقبوضہ غرب اردن میں یہودی بستی کریات اربع کے قریب اسرائیلی فوجیوں پر حملے کی کوشش کرنے والی ایک 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو گولی مار کر حملہ ناکام بنا دیا گیا ہے۔

فلسطینی سیکیورٹی ذرائع کے مطابق لڑکی کا نام لاما البکری ہے اور وہ الخلیل کی رہائشی ہے۔ اسرائیلی فوج نے اپنے بیان میں لڑکی کی حالت کا حوالہ دئیے بغیر بتایا کہ "حملے کو ناکام بنا دیا گیا ہے۔"

ھداسا ہسپتال کی ایک ترجمان کے مطابق فلسطینی لڑکی کو بیت المقدس کے ایک ہسپتال میں منتقل کیا جارہا تھا۔ اس واقعہ کی دیگر تفصیلات ابھی فوری طور پر میسر نہیں ہیں۔

یہودی بستی کریات اربع غرب اردن کے جنوبی حصے اور الخلیل کی حدود سے تھوڑا سا باہر واقع ہے۔ حالیہ تشدد کی لہر کے دوران الخلیل شہر میں کئی مرتبہ فلسطینی شہریوں اور اسرائیلی فوجیوں کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری رہا ہے۔

الخلیل میں انتہائی سخت سیکیورٹی حصار میں رہنے والے سینکڑوں اسرائیلی آبادکاروں اور فلسطینی شہریوں کے درمیان کشیدگی بہت بڑھ گئی تھی۔ یکم اکتوبر سے فلسطینیوں کے حملوں اور اسرائیلی فوجیوں کے ساتھ جھڑپوں کے نتیجے میں 116 فلسطینی شہری جاں بحق جبکہ 17 اسرائیلی، ایک امریکی اور ایک ایریٹریائی باشندہ ہلاک ہوگئے تھے۔

ان فلسطینیوں میں سے کئی اسرائیلی فوجیوں پر حملوں کے دوران گولی مار کر ہلاک کردئیے گئے تھے جبکہ باقی اسرائیلی فوج کے ساتھ جھڑپوں کے دوران گولیوں کا نشانہ بن کر جاں بحق ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں