داعشی جنگجوؤں نے کلہاڑے سے خاتون کا سر تن سے جدا کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام اور عراق میں وحشیانہ مظالم کی مرتکب شدت پسند تنظیم دولت اسلامی سے وابستہ جنگجو اب یہی خونی کھیل دوسرے ملکوں میں بھی متعارف کرا رہے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق لیبیا کے شہر سرت میں داعشی جنگجووں نے کلہاڑے سے ایک خاتون کا سر تن سے جدا کر دیا۔ ایک مرد کو گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا جب کہ ایک اور شہری کا ہاتھ کاٹ ڈالا۔

سرت سے عینی شاہدین نے ’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو بتایا کہ شدت پسند تنظیم سے وابستہ جنگجووں نے ’’اسلام کی شرعی سزاؤں کے نفاذ‘‘ کا اعلان کرنے کے بعد ہفتے کے روز اپنے مخصوص طریقے سے تین افراد کو سزائیں دیں۔ ایک نوجوان کو جاسوسی کے جرم میں گولیاں مار کر قتل کر دیا گیا، جب کہ ایک مراکشی خاتون کو جادو ٹونے کے الزام میں کلہاڑے کے وار کر کے اسے قتل کر دیا۔ ایک اور شخص کو چوری کے الزام میں سزا دئ گئی اور اس کا ایک ہاتھ کاٹ دیا گیا۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ سرت میں قابض داعشی شدت پسندوں کی جانب سے مقامی آبادی اور فوج کو وارننگ جاری کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کفریہ ریاست، مرتد اور طاغوت کی ایجنٹ فوجیوں کا کو خوفناک سزا دی جائے گی۔

خیال رہے کہ داعشی دہشت گردوں نے لیبیا کے سرت شہر کو چند ماہ قبل اپنے تسلط میں لے لیا تھا۔ داعشی پولیس کی جانب سے ’’الحسبہ‘‘ کے نام سے ایک نیا قانون نافذ کیا گیا ہے۔ اس قانون کے تحت شہریوں سے نہ صرف زکوۃ اکھٹی کی جاتی ہے بلکہ ٹیکسوں کی مد میں بھی ان سے رقوم اینٹھی جاتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں