داعش سے ہماری کوئی لڑائی نہیں: سربراہ نصرہ فرنٹ

شام میں محفوظ زون کے قیام کا فائدہ صرف ترکی کو ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں سرگرم القاعدہ کی مقرب سمجھی جانے والی عسکری تنظیم النصرہ محاذ کے سربراہ ابو محمد الجولانی نے کہا ہے کہ ترکی اور عالمی اتحادیوں کی چھتری تلے دولت اسلامی ’’داعش‘‘ سے لڑنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ شام میں ’’محفوظ زون‘‘ کے قیام سے صرف ترکی کو فائدہ پہنچے گا۔ نیز یہ کہ النصرہ فرنٹ القاعدہ سے الگ نہیں ہو گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق الجولانی نے اعتراف اپنے شام میں ایک محدود نیوز کانفرنس سے خطاب میں کیا۔ انہوں نے شام میں اعتدال پسند فورسز کی نمائندہ جیش الحر کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے شام کے علاحدگی پسند گروپوں پر بدیانتی کا الزام عاید کیا اور کہا کہ مخالفین النصرہ فرنٹ کے خلاف لڑائی میں کامیاب نہیں ہو سکتے۔ انہوں نے کہا کہ شام کی آزادی کے بعد اگر ملک کو اسلامی ریاست بنایا گیا تو النصرہ فرنٹ کے تمام جنگجو شام کی اسلامی مملکت کے سپاہی بن جائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں