حوثیوں کا سرحد پار سے سعودی عرب میں حملہ ناکام

جنگ بندی کی خلاف ورزیاں جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں حوثی باغیوں نے جنگ بندی معاہدے کے باوجود سرحد پار سے سعودی عرب میں حملے کی کوشش کی ہے، تاہم سعودی بارڈر سیکیورٹی فورسز نے یمنی باغیوں کا حملہ ناکام بنا دیا ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی قیادت میں یمن میں باغیوں کی سرکوبی کے لیے جاری آپریشن جنیوا میں ہونے والے مذاکرات کے اختتام تک روک دیا ہے مگر دوسری جانب حوثی باغی اور سابق منحرف صدر علی عبداللہ صالح کی وفادار ملیشیا سیز فائر کی مسلسل خلاف ورزیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ جنگ بندی کے باوجود گذشتہ روز حوثی باغیوں نے جنوبی سعودی عرب کے سرحدی شہر نجران میں حملہ کیا جس کے نتیجے میں ایک سعودی سپاہی شہید ہو گیا۔

سعودی عرب کی قیادت میں قائم اتحاد کے ترجمان جنرل احمد عسیری نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ حوثیوں کی جانب سے سرحد پار سے جنگ بندی کی خلاف ورزیاں جاری ہیں۔ گذشتہ روز بھی یمنی باغیوں کی طرف سے حملے کی کوشش کی گئی تھی مگر اسے ناکام بنا دیا گیا ہے۔

ادھر اطلاعات ملی ہیں کہ عدن میں یمنی حکومت اور باغیوں کے درمیان قیدیوں کا تبادلہ ہوا ہے۔ قیدیوں کے تبادلے کا جنیوا میں جاری مذاکرات سے کوئی تعلق نہیں۔ اگرچہ اقوام متحدہ کے امن مندوب نے فریقین پر اعتماد سازی کے لیے ایک دوسرے کے قیدی رہا کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔

یمنی حکومت کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ حوثیوں کے ہاں جنگی قیدی بنائے گئے 370 افراد کو بسوں کے ذریعے شمالہ شہر لحج کے الحد میں پہنچایا گیا جہاں انہیں حکومت نواز فورسز کے حوالے کر دیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ان قیدیوں کے بدلے میں مزاحمتی فورسز باغیوں کے 285 افراد کو رہا کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں