اسرائیل اور ترکی کا سفارتی تعلقات بحالی پر اصولی اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایک اسرائیلی عہدیدار نے دعوی کیا ہے کہ اسرائیل اور ترکی اصولی طور پر اپنے تعلقات کو معمول پر لانے کے لئے تیار ہو گئے ہیں۔

واضح رہے کہ یہ تعلقات 2010ء میں محاصرہ زدہ غزہ امداد لیکر جانے والے ترک اور دیگر ملکوں کے رضاکاروں کے ماوی مرمرہ نامی 'فریڈم فلوٹیلا' پر اسرائیلی کمانڈو حملے کے بعد کشیدہ چلے آ رہے تھے۔ ماوی مرمرہ جہاز پر اسرائیلی کمانڈوز کے حملے میں انسانی حقوق حریت [آئی ایچ ایچ] کے دس ترک رضاکار جاں بحق گئے تھے۔

نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اسرائیلی عہدیدار نے بتایا کہ دونوں فریقوں کے درمیان تعلقات بحالی کا معاملہ سویٹزرلینڈ میں زیر بحث آیا۔

عہدیدار نے دعوی کیا کہ انقرہ اور تل ابیب فریڈم فلوٹیلا پر اسرائیلی کمانڈوز کے حملے میں جاں بحق ہونے والے ترک رضاکاروں کے لواحقین کو زر تلافی ادا کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں