.

اسرائیلی وزیر داخلہ جنسی ہراسیت کے الزامات پر مستعفی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے وزیر داخلہ ِسلوان شالوم خود پر جنسی طور پر ہراساں کرنے کے الزامات لگنے کے بعد اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے ہیں۔ شالوم جو کہ نائب وزیر اعظم کے عہدے سے بھی مستعفی ہو رہے ہیں کا کہنا ہے کہ وہ یہ اپنے خاندان والوں کو مزید پریشانی سے بچانے کے لیے کر رہے ہیں۔

اٹارنی جنرل نے شالوم پر کئی خواتین کی جانب سے لگائے جانے والے ان الزامات کی تحقیقات کرنے کا حکم دیا ہے جبکہ سلوان شیلوم نے ان تمام الزامات کو مسترد کیا ہے۔

اسرائیل میں بائیں بازو کی جانب میلان رکھنے والے اخبار 'ہارٹز' سمیت دیگر اسرائیلی میڈیا نے سلوان شالوم کے سٹاف کے سابقہ ارکان کے حوالے سے بتایا ہے کہ وہ 'جنسی بد عملی' کی کارروائیوں میں ملوث ہیں۔

گذشتہ ہفتے کے دوران ایک اخبار نے رپورٹ کیا کہ سٹاف کی ایک سابقہ رکن نے وزیر صاحب پر الزام تو لگایا مگر باقاعدہ طور پر پولیس کو ان کے خلاف کارروائی کی درخواست نہ دی۔

اخبار کے مطابق "خاتون کا کہنا تھا کہ شالوم نے تقریبا دس سال پہلے ان سے جنسی روابط رکھنے کی خواہش کی تھی جو کہ ان کی جانب سے اتھارٹی کا فائدہ اٹھانے کی کوشش تھی۔ مگر زیادہ وقت گزرنے کی وجہ سے اب اس کیس کی پیروی نہیں ہو سکی ہے۔"

یہ الزام پچھلے سال بھی اس وقت سامنے آیا تھا کہ جب شالوم کو شمعون پیریز کے بعد صدارت کا امیدوار سمجھا جا رہا تھا۔ سلوان شالوم کا تعلق وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو کی دائیں بازو کی جماعت لیکوڈ سے ہے۔

اس الزام کے بعد کئی دیگر خواتین بھی وزیر صاحب کی رنگینیوں کی داستانیں لے کر سامنے آئی ہیں۔ اسرائیلی اخبار 'ہارٹز' کے مطابق "اس رپورٹ کے بعد کئی دیگر خواتین نے بھی الزام لگایا ہے کہ اسرائیلی وزیر دفاع نے ان کو جنسی طور پر ہراساں کیا ہے۔"

اسرائیل میں حالیہ برسوں کے دوران کئی اہم شخصیات کو ایسے واقعات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ اس کے علاوہ اسرائیلی فوج کو بھی ایسے مسائل کا سامنا رہتا ہے۔

انسداد دھوکا دہی کے پولیس چیف کو جنسی طور پر حراساں کرنے کی وجہ سے تحقیقات کا سامنا ہے جبکہ گذشتہ ماہ ایک اور رکن پارلیمان ینون مگل بھی جنسی طور پر حراساں کرنے کے الزامات کی وجہ سے مستعفی ہو گئے تھے۔

خیال رہے کہ سنہ 2011 میں سابق صدر موشی قصاب کو عصمت دری کے الزام میں سات سال کی جیل ہو گئی تھی۔ بعض اطلاعات کے مطابق اسرائیل کی پارلیمان میں شیلوم کی جگہ عامر اوہان لے سکتے ہیں۔