.

لبنان اپنا کوڑا کرکٹ برآمد کرے گا: کابینہ کا اتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کی کابینہ نے دارالحکومت بیروت سمیت مختلف شہروں کے کوڑا کرکٹ کو برآمد کرنے سے اتفاق کیا ہے اور اس مقصد کے لیے دو غیرملکی کمپنیوں کو اٹھارہ ماہ کے لیے ٹھیکا دے دیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق یہ کمپنیاں لبنان کے کوڑے کرکٹ کو سمندر کے ذریعے بیرون ملک منتقل کریں گی اور ان کی جانب سے مالی ذمے داریاں پوری کرنے کے بعد اسی ماہ سے اس منصوبے پر عمل درآمد کا آغاز ہوجائے گا۔

واضح رہے کہ جولائی میں لبنانی دارالحکومت بیروت میں کچرا ٹھکانے لگانے کے بڑے ڈپو کی بندش کے بعد شہر میں ہر طرف کوڑے کرکٹ کے ڈھیر لگ گئے تھے۔اس کے خلاف شہریوں نے کئی روز تک احتجاجی مظاہرے کیے تھے اور حکومت سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا۔

وزیراعظم تمام سلام نے اس تمام معاملے کو ایک المیہ قراردیا تھا اور کہا تھا کہ یہ سب کچھ حکومتوں کی سالہا سال کی غفلت کا نتیجہ تھا۔ انھوں نے کابینہ پر زور دیا تھا کہ وہ اس مسئلے کا حل نکالے۔انھوں نے یہ بحران حل نہ ہونے کی صورت میں مستعفی ہونے کی دھمکی دی تھی۔اب کابینہ کے فیصلے بعد انھوں نے کہا ہے کہ وہ اس باب کو احسن انداز میں بندکرنے میں کامیاب ہوجائیں گے۔

یادرہے کہ لبنانی کابینہ نے قبل ازیں کچرے کو ٹھکانے لگانے کے لیے طویل المیعاد منصوبے کی منظوری دی تھی۔اس کے تحت بلدیاتی اداروں (میونسپیلیٹیز) کو کچرے کی تلفی کے لیے مرکزی کردار سونپا گیا تھا۔وہی اب کچرے کو ٹھکانے لگانے کی ذمے دار ہوں گی۔

بیروت میں کوڑا کرکٹ کی تلفی کے لیے پلانٹ کو جولائی کے وسط میں بند کر دیا گیا تھا جس کے بعد شہر میں ہر طرف کچرے کے ڈھیر لگ گئے تھے اور حکومت بروقت کوئی متبادل بندوبست کرنے میں ناکام رہی ہے۔ کچرے کو ٹھکانے لگانے کے لیے احتجاجی مظاہروں سے شروع ہونے والی اس تحریک سے ملک میں ایک سیاسی بحران پیدا ہوگیا تھا۔