.

تیونس: حکومت نے ایمرجنسی میں دو ماہ کی توسیع کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

#تیونس کی حکومت نے نومبر میں ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد لگائی جانے والی ایمرجنسی میں توسیع کرتے ہوئے اسے 21 فروری تک بڑھا دیا ہے۔

تیونس کے آئین کے مطابق ایمرجنسی کی حالت میں صدارتی دفتر اور مسلح افواج کو مزید اختیارات حاصل ہوجاتے ہیں اور کچھ عوامی حقوق منسوخ کردئیے جاتے ہیں۔ صدارتی دفتر کے ایک بیان میں بتایا گیا تھا کہ ایمرجنسی میں توسیع کا فیصلہ وزیر اعظم اور سپیکر پارلیمنٹ سے مشاورت کے بعد کیا گیا ہے۔

تیونس کے صدر بیجی قائد السبسی نے پچھلے ماہ کے دوران دارالحکومت میں خودکش حملے کے بعد ملک بھر میں ایمرجنسی کے نفاذ کا اعلان کیا تھا۔ یہ حملہ حالیہ سال میں ہونے والا تیسرا بڑا حملہ تھا جس میں 12 صدارتی گارڈز ہلاک ہوگئے تھے۔ اس سے پہلے تیونس میں اسلام پسند شدت پسندوں نے غیر ملکی سیاحوں پر دو حملے کئے تھے جس کے نتیجے میں 59 سیاحوں سمیت 60 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔