.

حوثی باغیوں نے صنعاء کے گرد خندقیں کھودنا شروع کر دیں

حکومتی فورسز کی پیش قدمی روکنے کے لیے ٹینک تعینات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی باغیوں اور مںحرف صدر علی عبداللہ صالح کی وفادار ملیشیا نے حکومت نواز فورسز کی پیش قدمی روکنے کے لئے دارالحکومت صنعاء کے گرد خندقیں کھودنا شروع کر دی ہیں۔ دوسری جانب صنعاء گورنری میں حوثی باغیوں اور حکومت نواز فورسز کے درمیان گھمسان کی جنگ کی اطلاعات ہیں اور کئی مقامات پر حکومتی فوج نے باغیوں کے حملے پسپا کر کے پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق حوثی باغیوں اور علی صالح کی حامی ملیشیا نے صنعاء کے گرد و پیش میں مزاحمت کاروں کی پیش قدمی روکنے کے لیے خندقیں کھودنا شروع کر دی ہیں اور بڑی تعداد میں ٹینک پھیلا دیے ہیں۔ صنعاء کے نواحی علاقوں جبل نقم، بنی حشیش، ارزقین، ارحب، عمران شہر، خولان اور دیگر مقامات پر بڑی تعداد میں فوجی کیمپوں کو کیموفلاج کرنے کے ساتھ ساتھ جگہ جگہ خندقیں کھود کر مزاحمت کاروں کی راہ روکنے کی کوشش کی گئی ہے۔

ادھر تعز میں اتحادی فوج کے فضائی حملوں میں 21 حوثی باغی ہلاک اور بڑی تعداد میں زخمی ہوئے ہیں۔

مآرب میں حوثی باغیوں کی جانب سے ریپبلیکن محل پر کاتیوشا میزائلوں سے حملے کیے ہیں جن میں متعدد عام شہریوں کے مرنے کی اطلاعات ہیں۔ باغیوں کے حملے میں حکومتی فوج کی ایک گاڑی بھی تباہ ہو گئی۔

الجوف شہر سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق حوثی باغیوں کے بریگیڈ 115 کے زیر کنٹرول جبل الریحانہ کے بیشتر حصے پر مزاحمتی فورسز نے قبضہ کر کے باغیوں کو پسپا کر دیا ہے۔ لڑائی میں بڑی تعداد میں حوثی ہلاک اور گرفتار کیے گئے ہیں۔