.

عراق: کرد اور امریکی فوج کے آپریشن میں 12 جنگجو ہلاک

مقتولین میں مقامی امیر سمیت اہم داعشی کمانڈر شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شمالی شہر کرکوک میں امریکا اور کرد فورسز نے اپنے مشترکہ آپریشن میں شدت پسند تنظیم دولت اسلامی ’’داعش‘‘ کے کم سے کم ایک درجن جنگجو ہلاک اور نو کو گرفتار کر لیا ہے۔

کرکوک کے مقامی سیکیورٹی ذریعے نے بتایا کہ داعشی شدت پسندوں کے خلاف اس کارروائی میں کردستان کی انسداد دہشت گردی فورس کے اہلکاروں اور امریکی کمانڈوز نے حصہ لیا۔ بتایا گیا ہے کہ آپریشن میں امریکی فوج کے کمانڈوز کی جانب سے بھی معاونت کی گئی تھی جہیں ہیلی کاپٹر کی مدد سے کرکوک میں اتارا گیا۔

داعش کے خلاف یہ آپریشن الحویجہ کے نواحی علاقے الریاض میں کیا گیا۔ کارروائی میں آئینی عدالت اور زرعی فارم کو ہدف بنایا گیا تھا جہاں متمرکز شدت پسندوں کے خلاف آپریشن کے لیے امریکی فوجی بھی اتارے گئے۔

ذرائع کے مطابق آپریشن میں ہلاک ہونے والے جنگجوؤں میں ریاض کے علاقے کے مقامی داعشی امیر حسین عمری العصافی اور تنظیم میں جنگجو بھرتی کرنے کے ذمہ دار ابراہیم البطوشی بھی شامل ہیں۔ آپریشن میں ایک مکان سے کئی اہم دستاویزات بھی امریکی فوج کے ہاتھ لگی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکی فوجی آپریشن کے دوران داعش کے زیراستعمال متعدد کمپاؤنڈز پر حملے کیے گئے۔

ذرائع کے مطابق امریکی فوج کی نگرانی میں اسی نوعیت کا ایک آپریشن اکتوبر میں الحویجہ کے مقام پر کیا گیا تھا۔ دو ماہ قبل کیے گئے آپریشن میں بھی امریکی فوج کے کمانڈوز نے حصہ لیا تھا۔

رات کی تاریکی میں کیے گئے اس آپریشن کے دوران نو داعشی جنگجوؤں کو پکڑا گیا ہے جنہیں تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

کرکوک کے پولیس کرنل سرحد قادر نے بتایا کہ آپریشن میں داعش کی ایک خفیہ پناہ گاہ کو نشانہ بنایا گیا تھا۔ آپریشن کے دوران دہشت گردوں کی جانب سے بھی جوابی فائرنگ کی گئی تاہم اس کارروائی میں کرد فورسز کا کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ البتہ داعش کے بارہ دہشت گرد ہلاک ہو گئے۔

انہوں نے بتایا کہ ہلاک ہونے والے شدت پسندوں میں حسین الصافی نامی اہم کمانڈر بھی شامل ہے۔ تاہم عراق میں داعش کے خلاف سرگرم امریکی فوج کے ترجمان کرنل اسٹیف وارن نے کرکوک میں کسی بھی خفیہ آپریشن میں اپنی فوج کی شرکت کی تردید کی ہے۔

خیال رہے کہ اکتوبر میں کرد انسداد دہشت گردی پولیس اور امریکی فوج کے مشترکہ آپریشن میں کرکوک میں داعش کے کئی جنگجو ہلاک اور کم سے کم 70 یرغمالیوں کو چھڑا لیا گیا تھا۔