شام : حمص میں بم دھماکے ،32 افراد ہلاک ،90 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے وسطی شہر حمص میں دو بم دھماکوں کے نتیجے میں بتیس افراد ہلاک اور نوّے سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق حمص کے وسطی علاقے الزہرا میں سوموار کے روز بارود سے بھری ایک کار کو دھماکے سے اڑایا گیا ہے اور ایک جگہ پر حملہ آور بمبار نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا ہے۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے دو کار بم دھماکوں کی اطلاع دی ہے اور ان دونوں میں ہلاکتوں کی تعداد چھے بتائی ہے اور کہا ہے کہ سینتیس افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اسی ماہ کے اوائل میں حمص میں شامی حکومت اور باغی جنگجوؤں کے درمیان جنگ بندی کا سمجھوتا ہوا تھا۔اس کے بعد شہر میں یہ دوسرا بڑا حملہ ہے۔اس جنگ بندی کے تحت صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کے لیے اس شہر کے باغیوں کے زیر قبضہ علاقے پرکنٹرول کی راہ ہموار ہوگئی تھی۔

اس سے پہلے 12 دسمبر کو الزہرا ہی کے علاقے میں دو بم دھماکے ہوئے تھے۔ان میں سولہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامیہ عراق وشام (داعش) نے اس حملے کی ذمے داری قبول کی تھی اور کہا تھا کہ اس کے ایک خودکش بمبار نے بارود سے بھری کار کو دھماکے سے اڑایا تھا۔

حمص میں طے پائے جنگ بندی کے سمجھوتے کے تحت شامی فوج نے کم سے کم سات سو باغی جنگجوؤں اور ان کے خاندانوں کو محفوظ راستہ دیا تھا اور وہ وہاں سے دوسرے علاقوں کی جانب چلے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں