.

امریکی بحری جنگی جہازوں کے قریب ایرانی میزائل تجربات

واشنگٹن نے میزائل تجربے کو اشتعال انگیز قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی فوج کے ایک سینیر عہدیدار نے دعویٰ کیا ہے کہ پچھلے ہفتے ایران نے سمندر میں امریکا اور فرانس کے بحری جنگی جہازوں کے نزدیک میزائل تجربات کیے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر امریکی فوجی عہدیدار نے بتایا کہ ایرانی بحریہ نے میزائل تجربات ہمارے بحری جہازوں کے اتنے قریب کیے کہ انہیں اشتعال انگیز کارروائی قرار دیا جا سکتا ہے۔

’’این بی سی‘‘ نیوز نیٹ ورک سے بات کرتے ہوئے امریکی عہدیدارنے بتایا کہ ایرانی بحریہ نے ایک میزائل تجربہ امریکی جنگی بیڑے’’ھیر ایس ٹرومین‘‘ سے ڈیڑھ کلو میٹر دور اس وقت کیا جب بیڑا آبنائے ہرمز عبور کر رہا تھا۔

فوجی عہدیدار نے بتایا کہ اس میزائل ٹیسٹ کے دوران امریکی بحری جنگی جہاز’’بالکلی‘‘ اور فرانسیسی جنگی جہاز کے علاوہ کئی مال بردار جہاز بھی قریب ہی سے گذر رہے تھے۔

امریکی عہدیدار نے بتایا کہ ایرانی میزائل تجربات 26 دسمبر کو کیے گئے۔ اس دوران واشنگٹن اور پیرس کو کسی قسم کے حفاظتی انتظامات کی ضرورت نہیں پڑی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایرانی نیول فورس کی جانب سے آبنائے ہرمز میں موجود جہازوں کو وائرلس کی مدد سے میزایل تجربے کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے انہیں دور رہنے کا مشورہ دیا گیا تھا۔

امریکی فوجی افسر کا کہنا ہے کہ ان کا خیال ہے کہ ایرانی فوج نے میزائل سلطنت اومان کے سمندر میں موجود اپنے ایک بحری جہاز سے یہ میزائل داغا تھا۔