.

ایران نے امریکی نیوی کے یرغمال اہلکار رہا کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب نے بتایا ہے کہ امریکا بحریہ کے دس یرغمالیوں کو رہا کر دیا ہے۔ امریکی بحریہ کے ان اہلکاروں کو اس وقت حفاظتی حراست میں لیا گیا جب ان کی کشتیاں کویت اور بحرین کے درمیان سفر کر رہی تھیں۔

اس سے پہلے امریکی محکمہ دفاع نے بتایا تھا کہ ایرانی حکام نے کویت اور بحرین کے درمیان ان کی دو کشتیوں کو قبضے میں لیتے ہوئے ان پر سوار بحریہ کے 10 اہلکاروں کو یرغمال بنا لیا تھا۔

ادھر دوسری جانب امریکی فوج کے ایک عہدیدار کا کہنا ہے کہ حراست میں لیے گئے امریکیوں کی رہائی کے لیے بات چیت جاری ہے۔ آج بدھ کے روز دونوں کشتیوں کی واپس امریکی بحریہ میں شمولیت اور تمام یرغمالیوں کی رہائی کا امکان ہے۔

بحریہ کے اہلکاروں کی گرفتاری کے بعد امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے اپنے ایرانی ہم منصب جواد ظریف سے ٹیلیفون پر بات چیت کی ہے اور ان سے نیول حکام کی گرفتاری کے معاملے پر بات چیت کی ہے۔

العربیہ نے نامہ نامہ نگار کے مراسلے کے مطابق امریکی حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ وائٹ ہاؤس کشتیوں کو قبضے میں لینے اور بحریہ کے اہلکاروں کو یرغمال بنانے کے معاملے پر ایران سے کشیدگی بڑھانے کا خواہاں نہیں ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایرانی حکام کی جانب سے کشتیوں کو قبضے میں لیے جانے کا واقعہ صدر باراک اوباما کے کانگریس کے مشترکہ اجلاس سے خطاب پر اثرانداز نہیں ہو گا۔ صدر اوباما کانگریس کے اجلاس کے دوران اپنی مدت صدارت کے دوران ایران کے ساتھ طے پائے سمجھوتے کو اپنی اہم ترین کامیابی کے طور پر پیش کریں گے۔

قبل ازیں امریکی حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ ایران نے امریکی بحریہ کی دو چھوٹی کشتیوں کو قبضے میں لے لیا ہے۔ تاہم تہران کی جانب سے واشنگٹن کو اس بارے میں مطلع کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وہ جلد ہی کشتیوں کے عملے کو امریکی حکام کے حوالے کر دیں گے۔

امریکی قومی سلامتی کے نائب مشیر بن روڈز نے وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ امریکا ایران کے ساتھ کشتیوں کے معاملے کو خوش اسلوبی سے حل کرنے کا خواہاں ہے۔

ادھر ایرانی پاسداران انقلاب نے منگل کو جاری کردہ ایک بیان میں تصدیق کی تھی کہ بحریہ نے سمندر میں ایرانی حدود میں داخل ہونے والی دو امریکی کشتیوں کو قبضے میں لیا ہے۔ ان کشیتوں پرایک خاتون اور نو مرد فوجی اہلکار سوار تھے جنہیں حراست میں لے لیا گیا ہے۔ پاسداران انقلاب کا کہنا ہے کہ امریکی کشیتوں کو مقامی وقت کے مطابق 16:30 پر جزیرہ الفارسی کے قریب سے ایران کی سمندری حدود میں داخل ہونے پر قبضے میں لیا گیا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ حراست میں لیے گئے تمام امریکی سیلر محفوظ ہیں۔