.

بشار الاسد کو اقتدار چھوڑںے کا نہیں کہیں گے: روس

پیوٹن کے مندوب نے بشار الاسد سے حکومت چھوڑنے کا مطالبہ نہیں کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی ذرائع ابلاغ نے حکومت کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں اس کا کہنا ہے کہ صدر ولادی میر #پیوٹن کے #شام کے لیے خصوصی ایلچی نے چند ہفتے قبل صدر #بشار_الاسد سے ملاقات میں ان سے حکومت چھوڑنے سے متعلق کوئی بات نہیں کی۔

خبر رساں ایجنسی’’ٹاس‘‘ کئ مطابق #ماسکو کا شام میں صدر اسد کے حوالے سے موقف واضح ہے جس میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔ روس صدر بشارالاسد کو حکومت چھوڑنے کی تجویز نہیں دے گا۔

’’ٹاس‘‘ نے کریملین کے ترجمان دیمتری بیسکوف کا ایک بیان نقل کیا جس ہے جس میں انہوں نے اس بات کی سختی سے تردید کی ہے کہ روسی مندوب نے صدر اسد سے حکومت چھوڑنے کی کوئی بات کی تھی۔

خیال رہے کہ خبار ’’فائننشل ٹائمز‘‘ نے اپنے ایک حالیہ رپورٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ روس کے ملٹری انٹیلی جنس نے پچھلے سال شام کے دورے کے دوران صدر بشارالاسد سے ملاقات کی تھی جس میں ان سے حکومت سے علاحدہ ہونے کی تجویز پیش کی تھی اہم صدر اس نے سخت غصے میں ان کی تجویز مسترد کردی تھی۔