.

شہداء کی تعزیت، زخمیوں کی عیادت کیلئے سعودی ولی عہد کی الاحسا آمد

شہزادہ محمد بن نایف کا فوجی مراکز کا دورہ، سیکیورٹی حکام سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن نایف بن عبدالعزیز نے الاحساء گورنری کی ایک مسجد میں جمعہ کے روز ہونے والے دھماکوں کے بعد شہداء کی تعزیت اور زخمیوں کی عیادت کرتے ہوئے دہشت گردی کے خلاف جنگ جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شہزادہ محمد بن نایف ہفتے کو الاحساء گورنری پہنچے جہاں انہوں نے جامع مسجد الرضا میں دھماکے میں شہید ہونے والے شہریوں کے لواحقین سے ملاقات کی اور ان کے ساتھ دلی ہمدردی و غم گساری کا اظہار کیا۔

شہداء کے ورثاء سے ملاقات کے بعد ولی عہد نیشنل گارڈز کے شاہ عبدالعزیز میڈیکل کمپلیکس گئے جہاں انہوں نے مسجد الرضا میں دھماکے کے زخمیوں کی عیادت کی۔ انہوں نے اسپتال کی انتظامیہ کو تمام زخمیوں کو علاج کی بہترین سہولیات مہیا کرنے کی بھی ہدایت کی۔ ولی عہد شہزاد محمد نایف نے فرداً فرداً تمام زخمیوں کی عیادت کی اور ان کی جلد صحت یابی کی بھی دعا کی۔ ولی عہد نے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے بھی زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے نیک تمناؤں کا پیغام پہنچایا۔

زخمی شہریوں سے بات کرتے ہوئے شہزادہ محمد بن نایف کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے نتیجے میں شہید اور زخمی ہونے والے شہری ملک وقوم کے لیے سرمایہ فخرہیں۔ زخمیوں کی عیادت اور ان کی صحت یابی کے لیے بہترین سہولیات کی فراہمی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔

انہوں نے کہا کہ الاحساء کی جامع الرضاء میں دہشت گردی کا واقعہ مملکت میں اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ نہیں۔ دہشت گرد اس طرح کی مذموم کارروائیوں سے ہمارے عزم کو شکست نہیں دے سکتے۔ دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے ہمارے عزم میں ایسے واقعات مزید پختگی کا باعث بنتے ہیں۔

قبل ازیں الاحساء ہوائی اڈے پرآمد پر مشرقی علاقے کے گورنر شہزادہ سعود بن نایف بن عبدالعزیز، الاحساء کے گورنر شہزادہ بدر بن محمد بن جلوی، ڈائریکٹرجنرل سیکیورٹی میجر جنرل عثمان بن ناصر المحرج، سیکرٹری الاحساء خالد البراک، پولیس چیف جنرل غرم اللہ بن محمد لزھرانی، ڈائریکٹر پبلک ٹریفک میجر جنرل عبداللہ بن حسن الزھرانی اور دیگر سیکیورٹی عہدیداروں نے ان کا استقبال کیا۔

ولی عہد کے ہمرہ الاحساء کے دورے کے موقع پر شاہی دیوان کے مشیر عبداللہ نن عبدالرحمان المحیسن، شاہ سلمان کے خصوصی امور کے انچارج سلیمان بن نایف الکثیری، ڈائریکٹر جنرل ریسرچ برائے محکمہ داخلہ میجر جنرل سعود بن صالح الداؤد اور ولی عہد کے پرنسپل سیکرٹری احمد بن صالح العجلان بھی موجود تھے۔