.

حملے کا شبہ، فلسطینی نوجوان اسرائیلی گولی کا نشانہ بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ فلسطین کے علاقے غرب اردن کے ہسپتال ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوج نے ایک 17 سالہ فلسطینی لڑکے کو گولی مار کر شہید کر دیا ہے۔ ادھر اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ انہوں نے لڑکے کو اس وقت گولی کا نشانہ بنایا جب وہ فوجیوں پر پٹرول بم پھینکنے لگا تھا۔

اسرائیلی فوج کے مطابق ان کے فوجیوں نے ایک فلسطینی نوجوان کو غرب اردن کی مرکزی شاہراہ کے پاس دیکھا جو کہ گزرتی ہوئی گاڑیوں کے اوپر پٹرول بم پھینکنے والا تھا۔

اسرائیلی فوج کی ترجمان خاتون کا کہنا تھا کہ "اسرائیلی فوج نے اس خطرے کا فوری طور پر سامنا کیا اور اس حملے کو ناکام بنانے کے لئے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں ایک نوجوان کو گولی لگ گئی۔" فلسطینی وزارت صحت نے اس نوجوان کی موت کی تصدیق کی۔

پچھلے سال ماہ اکتوبر کے بعد سے فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیلی شہریوں پر مختلف حربے استعمال کرتے ہوئے حملے کئے گئے ہیں جن میں 27 اسرائیلی اور ایک امریکی شہری ہلاک ہوچکے ہیں۔ اسرائیلی فوج نے اس عرصے کے دوران کم ازکم 156 فلسطینیوں کو شہید کر دیا ہے۔