.

العبادی کاعراق میں سرگرم غیرقانونی ملیشیا کے خلاف اعلان جنگ

داعش کے قبضے سے نصف علاقے واپس لے لیے:حیدر العبادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا ہے کہ شیعہ ملیشیا حشدالشعبی کی صفوں میں شامل بعض خلاف قانون گروپوں کی چھان بین کے بعد انہیں کچل دیں گے۔ان کا کہنا ہے کہ عراق داعش کے خلاف جنگ جیت رہا ہے۔ ایک سال میں عراقی فورسز نے داعش کے زیرقبضہ کل رقبے کا نصف واپس لے لیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جرمنی کے شہرمیونخ میں عالمی سلامتی کانفرنس سے خطب کرتے ہوئے العبادی نے کہا کہ عراق میں کچھ غیرقانونی تنظیمیں موجود ہیں۔ انہیں شیعہ ملیشیا حشدالشعبی سے الگ کرکے ان کے خلاف جنگ لڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بغداد حکومت ملک میں کسی غیرقانونی گروپ کی سرپرستی کرے گی اور نہ ہی کسی کو ریاستی رٹ کو چیلنج کرنے کی اجازت دی جائے گی۔ خلاف قانون سرگرم ہرتنظیم اور گروپ کو کچل دیا جائے گا۔

العبادی نے کہا کہ عراقی فوج شدت پسند گروپوں بالخصوص دولت اسلامی’’داعش‘‘ کے زیرقبضہ علاقوں کو واپس لینے کی کامیاب جنگ لڑ رہی ہے۔ جولائی 2014ء کے بعد دولت اسلامی کے قبضے میں چلے گئے علاقوں کا نصف داعش سے چھین لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت نینویٰ اور الانبار گورنریوں کے کچھ علاقے داعش کے قبضے میں ہیں۔ انہیں بھی جلد ہی داعش سے چھڑایا لیا جائے گا۔