.

غربِ اردن : فلسطینی کے چاقو حملے میں اسرائیلی فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ مغربی کنارے میں دو فلسطینیوں نے چاقو کے وار کرکے ایک اسرائیلی فوجی کو ہلاک کردیا ہے اور ایک کو زخمی کردیا ہے۔

اسرائیلی فوج کی ایک خاتون ترجمان نے کہا ہے کہ اکیس سالہ فوجی غربِ اردن کے شہر رام اللہ کے نزدیک واقع ایک سپر مارکیٹ میں چاقو حملے میں شدید زخمی ہوگیا تھا۔اس کو مقبوضہ بیت المقدس میں واقع شعار زیدک اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ اپنے زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسا ہے۔

اسرائیلی فوج نے اس کی شناخت ٹووایا وائزمین کے نام سے کی ہے۔وہ رام اللہ کے نزدیک واقع ایک یہودی بستی معالے مخمس سے تعلق رکھتا تھا اور حملے کے وقت ڈیوٹی پر نہیں تھا۔

چاقو حملے میں زخمی ہونے والا ایک یہودی اسپتال میں زیر علاج ہے۔ان دونوں پر چاقو حملے کو دیکھنے والی تین عورتیں صدمے سے دوچار ہوگئی تھیں اور ان کا بھی اسپتال میں علاج کیا جارہا ہے۔

اسرائیلی پولیس کے ایک بیان کے مطابق ''دو فلسطینی صنعتی زون شعار بنیامین میں واقع سپر مارکیٹ رامی لیوی میں داخل ہوئے تھے اور انھوں نے دو اسرائیلی شہریوں کو چاقو گھونپ دیے تھے۔اس موقع پر موجود ایک مسلح یہودی نے ان دونوں پر فائرنگ کردی جس سے وہ شدید زخمی ہوگئے ہیں''۔

ان دونوں کو بھی شعار زیدک اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔اسپتال کی ایک خاتون ترجمان کا کہنا ہے کہ گولی لگنے سے ایک حملہ آور کو شدید زخم آئے ہیں اور اس کا علاج کیا جارہا ہے۔دوسرے حملہ آور کی حالت تشویش ناک ہے''۔فلسطینی ذرائع کا کہنا ہے کہ ان دونوں حملہ آوروں کی عمریں چودہ چودہ سال ہیں۔

واضح رہے کہ مقبوضہ مغربی کنارے اور بیت المقدس میں اسرائیلی سکیورٹی فورسز کی یکم اکتوبر سے جاری تشدد آمیز کارروائیوں میں ایک سو بہتر فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔ان میں سے بیشتر کے بارے میں اسرائیلی فورسز نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ مبینہ طور پر حملہ آور تھے اور انھوں نے یہودیوں پر چاقو حملوں کیے تھے یا اپنی گاڑیوں کو راہ چلتے راہ گیروں پر چڑھا دیا تھا جس سے ستائیس اسرائیلی ،ایک امریکی اور ایک ایریٹرین شہری ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔