.

حسن نصر اللہ تصویر کے پردے میں بھی 'عریاں' نکلا!؟

حزب اللہ سربراہ کی شخصیت پر مبنی 'العربیہ' کی خصوصی دستاویزی فلم آج نشر ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

’’العربیہ‘‘ نیوز چینل نے اپنی حالیہ دستاویزی فلم میں لبنان میں سرگرم ایران نواز شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے سیکرٹری جنرل حسن نصراللہ کی زندگی کے اہم گوشوں پر روشنی ڈالی ہے۔ دستاویزی فلم میں حسن نصراللہ کے پیغامات،ان کی سیاسی اور نجی زندگی حتیٰ کہ منبر ومحراب کے ذریعے لوگوں کو 'گمراہ' کرنے کی تقاریر پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے۔

دستاویزی فلم میں بتایا گیا ہے کہ حسن نصراللہ اپنے والد کی سب سے بڑی اولاد نرینہ ہیں۔ وہ مشرقی بیروت کی’الکرنتینا‘‘ کالونی میں پیدا ہوئے۔ مذہبی تعلیم کے لیے انہوں نے عراق کے شہر نجف کا سفر کیا۔ شیعہ مسلک کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد وطن واپسی پر انہوں نے ’’تحریک امل‘‘ میں شمولیت اختیار کی اور ’‘وادی البقاع‘‘ سے اپنی سیاسی سرگرمیاں شروع کیں۔ تحریک امل سے علاحدگی کے بعد براہ راست ایران کی معاونت اور حمایت سے ’’حزب اللہ‘‘ تشکیل دی اور آج تک وہ اس تنظیم کے سربراہ ہیں۔

دستاویزی فلم میں حسن نصراللہ کی قیادت میں حزب اللہ کی تمام جنگجوں میں شمولیت پر بھی روشنی ڈالی گئی ہے۔ ان میں جنوبی لبنان سے اسرائیلی فوج کے انخلاء اور سابق لبنانی وزیراعظم رفیق حریری کی قاتلانہ حملے میں ہلاکت جیسے واقعات بھی شامل ہیں۔ اس کے ساتھ لبنان کے سیاسی اداروں میں حزب اللہ کی شمولیت اور شام کی جنگ میں تنظیم کے منفی کردار پر بھی تفصیل سے روشنی ڈالی گئی ہے۔

مختصر دورانیے کی دستاویزی فلم العربیہ پر ہفتے کی شام گرینج کے معیاری وقت کے مطابق شام 8:30 جب کہ سعودی عرب کے مقامی وقت کے مطابق رات 11:30 پر نشر کی جائے گی۔