.

یمنی فوج نے تعز کا جنوب، مغربی سمت محاصرہ ختم کرا لیا

دارلحکومت صنعاء میں حوثی نواز قبائلی سرداروں میں پھوٹ پڑ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب تعز کے محاذ پر پیش قدمی کی۔ حوثی ملیشیاء نے اس شہر کا گزشتہ 10 مہینوں سے محاصرہ کر رکھا ہے۔

تعز کے مغربی محاذ پر ہونے والی اس لڑائی میں حوثی ملیشیا اور علی عبداللہ صالح کے 37 وفادار جنگجو مارے گئے جبکہ دسیوں دیگر زخم چاٹنے پر مجبور ہوئے۔ ادھر سرکاری فوج نے باغی ملیشیاؤں کی پسپائی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شہر کی جانب پیش قدمی کی۔

یمن کی قومی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے شہر کے الاقروض محاذ پر ملنے والی کامیابی کے بعد المسراخ ڈائریکٹوریٹ کو باغیوں سے مکمل طور پر خالی کرانے کا اعلان کر دیا ہے۔

اس کامیابی کے بعد آنے والے چند دنوں میں تعز شہر کے محاصرے کے مکمل خاتمے کی امید پیدا ہو چلی ہے۔

سرکاری فوج کے حمایت یافتہ عوامی مزاحمت کاروں نے المظفر ڈائریکٹوری کے الصقر کلب اور پولیس ہیڈکوارٹر کا کنڑول حاصل کر لیا ہے۔ یہ عمارتیں دیر پاشا کالونی میں واقع ہیں۔ یہ کامیابی اس وقت مزاحمت کاروں کے حصے میں آئی جب وہ مضافاتی علاقے الحصب میں واقع پرانے ہوائی اڈے کو چھوڑ کر فرار ہوئے۔ یہ پیش رفت ملیشیاؤں کی صفوں میں ٹوٹ پھوٹ کی نشاندہی کرتی ہے۔

صنعاء کے قبائلی سرداروں کی بغاوت

ادھر 'العربیہ' کو اپنے ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ متعدد قبائل نے حوثیوں سے علاحدگی کا اعلان کر دیا ہے۔ ان کا یہ اقدام یمن کی آئینی حکومت کی حمایت کا مظہر ہے۔ یہ صورتحال یمنی فوج اور مزاحمت کاروں کو تعز شہر میں ملنے والی یکے بعد دیگرے فوجی نوعیت کی کامیابیوں کی مرہون منت ہے۔

یمن کی سرکاری فوج نے تعز کے مغرب اور جنوب کے محاذوں پر کامیابی کے بعد وہاں کلین اپ آپریشن شروع کر رکھا ہے تاکہ مسلح ملیشیاؤں کی باقیات سے شہر کو پاک کیا جا سکے۔ کلین اپ آپریشن کے ساتھ ساتھ مزاحمت کاروں اور یمنی فوج نے تعز کے مشرقی محاذ پر باغی ملیشیاؤں کے ٹھکانوں کو بھی نشانہ بنا رہی ہے۔

اس سے قبل جمعہ کے روز یمنی مزاحمت کار شدید جھڑپوں کے بعد تعز یونیورسٹی میں داخل ہونے میں کامیاب ہوئے۔ اس لڑائی میں دسیوں انقلابی ہلاک ہوئے اور متعدد دوسروں کو مزاحمت کاروں کے ماہر نشانچیوں نے ان عمارتوں سے گرفتار کیا جہاں وہ پوزیشن سنبھالے بیٹھے تھے۔

درایں اثنا اتحادی طیاروں نے تعز کے شمال میں الستین نامی شاہراہ پر نصب باغیوں کے متعدد میزائل لانچرز تباہ کئے۔