.

خامنہ ای اپنی موت کے ذکر پر آبدیدہ ہو گئے: ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سرکاری اور غیر سرکاری ذرائع ابلاغ کے ساتھ سوشل میڈیا پر بھی ایک فوٹیج کافی شیئر کی جا رہی ہے جس میں ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کو ایک تقریب کے دوران اپنے موت کا ذکر ہونے پر روتے دکھایا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سوشل میڈیا پر آنے والے اس فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ تقریب کے دوران ایک شخص آیت اللہ علی خامنہ ای کے حق میں نعرے لگانے کے ساتھ علی رضا بناھیان نامی ایک دوسرے لیڈر سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ رہبر انقلاب کی موت سے متعلق کوئی بات نہ کریں۔ اس پر خامنہ ای رو پڑتے ہیں۔ اس شخص کی تعریف کرتے ہیں اور اس کی درازی عمر کی دعا کرتے ہیں۔

ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ واقعہ ہفتے کی شام اس وقت پیش آیا جب سپریم لیڈر کی زیر صدارت سیدہ فاطمۃ الزھراء رضی اللہ عنہا کے یوم وفات کے سلسلے میں ایک تقریب منعقد کی گئی تھی۔ اس تقریب میں عراق۔ ایران جنگ کے دوران معذور ہونے والا ایک سابق فوجی بھی تھا اور ’’عمار‘‘ نامی ایک تنظیم کا لیڈر علی رضا بناھیان بھی موجود تھا۔ بناھیان نے اپنی گفتگو میں سپریم لیڈر کی عمر رسیدگی کا ذکر کرتے ہوئے یہ خدشہ ظاہر کیا کہ وہ زیادہ دیر تک ان کے پاس نہیں رہیں گے۔ اس پر تقریب میں موجود ایک شخص بلند آواز سے پکارا کے سپریم لیڈر کی موت کی بات نہ کی جائے۔ اس پر خود خامنہ ای بھی آبدیدہ ہو گئے۔

خیال رہے کہ ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ اپنی پیرانہ سالی کے باعث بہت سے حکومتی فرائض کی انجام دہی سے بھی دور رہتے ہیں۔ حال ہی میں منتخب ہونے والی رہبر کونسل کے سامنے انہوں نے تین شرائط واضح کیں اور کہا کہ ان کا جانشین انقلابی ہونا چاہیے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ پروٹیسٹ کینسر کے شکار ایرانی سپریم لیڈر اب ڈوبتا سورج ہیں۔ ان کی جانب سے اپنے جانشین کے انتخاب کے لیے شرائط کا اظہار بھی اس بات کا اشارہ ہے کہ وہ زیادہ دیر تک ملک کی بھاگ ڈور اپنے ہاتھ میں نہیں رکھ پائیں گے۔