.

صدام کے نائب کی وڈیو.. ایران کے خلاف صف آرا ہونے کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سابق صدر صدام حسین کے معروف زمانہ نائب عزت الدوری نے باور کرایا ہے کہ اگر امریکی انتظامیہ عراق اور اس کے عوام کو ایرانی تسلط سے بچانے اور خون ریزی روکنے کے لیے حرکت میں نہ آئی تو عراق میں ایران اور اس کی ملیشیاؤں کی جانب سے جو کچھ کیا جارہا ہے اس کا ذمہ دار امریکا ہی ہوگا۔

العربیہ نیوز چینل کو حاصل ہونے والی خصوصی وڈیو ٹیپ میں الدوری نے عرب ممالک کو پیغام دیا کہ وہ سعودی عرب کے زیرقیادت اتحاد کے پرچم تلے ایران کے سامنے صف آرا ہوجائیں۔

الدوری کے نزدیک یمن کے بحران سے نمٹنے کے واسطے مطلوبہ اقدامات کیے جائیں۔ ان میں ایران اور اس کے ایجنٹوں کو سلامتی کونسل کی قراردادوں کو ماننے پر مجبور کرنا، آئینی حکومت کے سائے میں خلیج تعاون کونسل کے ممالک کی نگرانی کے ذریعے قومی مکالمے کی کانفرنس سے حاصل نتائج پر عمل درامد کرنا، ایران کے ایجنٹوں کے تعاقب کو بڑھا کر ان کی تمام تر صلاحیتوں کو ختم کرنا شامل ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال 17 اپریل کو عراق کے شہر تکریت کے نزدیک جھڑپ میں عزت الدوری کے ہلاک ہونے سے متعلق افواہیں گردش میں آچکی ہیں۔

اس وقت موقع پر بھورے بالوں اور داڑھی والے ایک شخص کی لاش کی تصاویر بھی پھیل گئی تھیں۔ یہ تصاویر صدام حسین کی حکومت کے اہم ترین اہل کار عزت الدوری سے شباہت رکھتی تھیں۔ عزت الدوری 2003 میں صدام حکومت کے سقوط کے بعد سے روپوش ہوگئے تھے۔

تاہم مذکورہ لاش کو حاصل کرنے والے عراقی حکام نے اس کی شناخت کی تصدیق نہیں کی تھی۔ بالخصوص اس اعلان کے بعد کہ اس کے پاس ڈی این اے کا نمونہ نہیں ہے جس کا الدوری کی مبینہ لاش کے ساتھ موازنہ کیا جائے۔