.

دمشق : سیدہ زینب کے مزار کے نزدیک کار بم دھماکا،5 ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق میں نواسیِ رسول سیدہ زینب رضی اللہ عنہا کے مزار کے نزدیک کاربم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک اور بیس زخمی ہوگئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے اس بم دھماکے میں پانچ ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے جبکہ برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کا کہنا ہے کہ واقعے میں آٹھ افراد مارے گئے ہیں۔

سیدہ زینب رضی اللہ عنہا کے مزار اور اس کے آس پاس کے علاقے میں شامی حکومت نے سکیورٹی کے سخت انتظامات کررکھے ہیں۔اس کے علاوہ لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ سے تعلق رکھنے والے جنگجو بھی اپنے طور پر وہاں سکیورٹی پر مامور ہیں۔ان کے علاوہ ایران کے حمایت یافتہ شیعہ رضاکار اپنے طور پر بھی وہاں سکیورٹی کی ذمے داریاں انجام دے رہے ہیں۔

مزار کی جگہ سے سیکڑوں میٹر دور سکیورٹی فورسز نے چیک پوائنٹس قائم کر رکھے ہیں اور وہیں گاڑیوں کو روک لیا جاتا ہے اور پھر وہاں سے لوگ پیدل چل کر مزار تک پہنچتے ہیں لیکن سکیورٹی کے ان سخت انتظامات کے باوجود داعش کے جنگجو حالیہ مہینوں کے دوران متعدد بم حملے کرچکے ہیں۔

فروری میں مزار کے نزدیک بم دھماکوں میں ایک سو چونتیس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ان میں زیادہ تر عام شہری تھے۔داعش نے ان بم دھماکوں کی ذمے داری قبول کی تھی۔جنوری میں داعش کے ایک اور بم حملے میں ستر افراد مارے گئے تھے۔