.

حلب شہر انسانی المیے کے دہانے پر: ریڈ کراس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بین الاقوامی تنظیم ریڈ کراس [صلیب احمر] نے جمعرات کے روز جاری بیان میں کہا ہے کہ "حلب میں پر تشدد کارروائیوں میں اضافے کے ایک ہفتے بعد شہر انسانی المیے کے دہانے پر ہے۔"

تنظیم کے مطابق حلب میں اپوزیشن اور شامی حکومت کے زیرانتظام فورسز کے درمیان گھمسان کی لڑائی نے شہر کی آبادی میں شامل لاکھوں افراد کی مشقت اور لاچارگی کو سنگین سطح پر پہنچا دیا ہے۔ واضح رہے کہ حلب شہر کو شام میں پانچ برسوں سے جاری تنازع میں لڑائی سے سب سے زیادہ متاثرہ علاقوں میں شمار کیا جاتا ہے۔

شامی حکومت کے طیاروں کے فضائی حملوں میں 22 اپریل سے اب تک صرف حلب شہر میں ہی 89 سے زیادہ شہری جاں بحق اور 135 کے قریب زخمی ہوچکے ہیں۔

اس دوران شہر کے علاقے السکری میں القدس ہسپتال (فیلڈ ہسپتال) اور اس کے پڑوس میں ایک عمارت پر فضائی بمباری کے نتیجے میں 27 سے زیادہ شہری جاں بحق ہوئے۔ شام میں انسانی حقوق کی رصدگاہ نے تصدیق کی ہے کہ یہ حملہ شامی حکومت کے طیاروں نے کیا تھا۔

دوسری جانب شامی حکومت کی جانب سے شہری دفاع اور ہنگامی امداد کی ٹیموں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری ہے جس کے سبب شہر میں انسانی صورت حال مزید پیچیدہ ہو گئی ہے۔