خطرے کی گھڑی میں عرب برادران کے ساتھ ہوں گے: السیسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے صدر عبدالفتاح السيسی کی سربراہی میں منگل کی شام ایک اہم اجلاس منعقد کیا گیا جس میں وزیر دفاع صدقی صبحی، چیف آف جنرل اسٹاف محمود حجازی اور دیگر اعلیٰ فوجی قیادت نے شرکت کی۔ اجلاس میں شمالی سیناء میں فوجی کارروائیوں اور انسداد دہشت گردی کے لیے کی جانے والی کوششوں کا جائزہ لیا گیا۔

اس موقع پر مصری صدر السیسی نے باور کرایا کہ علاقائی پیش رفت اور خطے کے متعدد ممالک میں امن و امان کی دشوار صورت حال کے پیش نظر انتہائی احتیاط اور ہوشیاری کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مصری عوام کے تحفظ کی خاطر مسلح افواج کے اہل کاروں کی جانب سے دہشت گرد اور مجرمانہ کارروائیوں کو روکنے کی کوششوں کو بھی سراہا۔

مصری صدر نے زور دے کر کہا کہ ان کا ملک عربوں کی صفوں میں یکجہتی کو یقینی بنانے کے لیے اور عدم استحکام سے متعلق درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے اپنے برادر عرب ملکوں کے ساتھ کھڑا رہے گا۔

اس سے قبل مصری وزیر دفاع صدقی صبحی نے مسلح افواج کے یونٹوں کی تربیتی مشق کے کے سالانہ منصوبے کے سلسلے میں "مجد 14" نامی توپ کی براہ راست گولہ باری کا مظاہرہ دیکھا۔

انہوں نے مشق کی ادائیگی میں شامل فورسز کی اعلی مہارت اور حربی آلات کے استعمال کی قابلیت کو بھرپور انداز سے سراہا۔

اس موقع پر صبحی نے ہر سطح کی قیادت اور افسران پر زور دیا کہ وہ سائنس اور ٹکنالوجی کے میدان میں ہر نئی چیز سے استفادہ کریں تاکہ لڑائی کا تجربہ حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ بھرتی کیے جانے والے اہل کاروں کی صلاحیتوں کا ارتقاء عمل میں آسکے اور وہ خود کو سونپی جانے والی ذمہ داریوں کو بہترین انداز سے پورا کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں