.

مصر: اخبارات میں وزیر داخلہ کی "نیگیٹو" تصویر شائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں جرنلسٹس سنڈیکیٹ کے فیصلوں کی پاسداری کرتے ہوئے جمعرات کی صبح ملک کے زیادہ تر اخبارات نے مصری وزیر داخلہ کی سیاہ (نیگیٹو) تصاویر شائع کی ہیں۔ یہ اقدام بدھ کے روز جرنلسٹس سنڈیکیٹ کے صدر دفتر پر وزارت داخلہ کی فورس کے دھاوے اور متعدد صحافیوں کی گرفتاری کے خلاف احتجاجا سامنے آیا ہے۔

مصری اخبارات "المصری اليوم"، "الشروق"، "اليوم السابع"، "البوابہ"، "الوطن" اور "المقال" جو نجی اخبارات ہیں ان سب نے سنڈیکیٹ کے فیصلے پر عمل کیا جب کہ "الاہرام" اخبار نے اس پر عمل سے انکار کرتے ہوئے اپنے پہلے صفحے پر لکھا ہے کہ "صحافیوں کی جنرل اسمبلی کا انعقاد ناکام ہو کر اجلاس میں تبدیل" ہو گیا۔ تاہم الوفد پارٹی کے اخبار "الوفد" نے باور کرایا ہے کہ وہ سنڈیکیٹ کے فیصلے کی پاسداری کرے گا۔

جرنلسٹس سنڈیکیٹ نے ہر اخبار کی جانب سے وزارت داخلہ کے بائیکاٹ کیے جانے سے متعلق فیصلے اور وزیر داخلہ کی برطرفی کے مطالبے پر قائم رہنے کے اعلان کے چند گھنٹوں بعد باور کرایا کہ وہ اخبارات کی جانب سے سنڈیکیٹ کے فیصلوں پر عمل درامد کی نگرانی کی جائے گی۔ سنڈیکیٹ نے تمام اخبارات پر زور دیا کہ وہ جمعرات اور جمعہ کے روز "یکساں ایڈیٹوریل" شائع کریں جس میں وزیرداخلہ کی برطرفی کا مطالبہ کیا جائے۔ سنڈیکیٹ کے مطابق آئندہ دنوں میں "ہفتہِ غضب" منایا جائے تاکہ "صحافیوں سمیت تمام مصری شہریوں کے خلاف وزارت داخلہ کی خلاف ورزیوں" کو بے نقاب کیا جاسکے۔ اس کے علاوہ آئندہ اتوار کے روز تمام اخبارات کے پہلے صفحے کے کچھ حصوں کو سیاہ کرنے اور تمام اخبارات کی ویب سائٹ کے پہلے صفحے پر سیاہ علامتی نشان چسپاں کرنے کا مطالبہ بھی سامنے آیا ہے۔ تاہم اس مطالبے کو بہت سے اخبارات نے مسترد کردیا۔

جرنلسٹس سنڈیکیٹ نے پارلیمنٹ پر زور دیا ہے کہ ایسے قوانین کا اجراء عمل میں لایا جائے جو صحافیوں پر حملے یا انہیں (آئین کی ضمانت کے مطابق) اپنے کام سے روکنے کی سزا کو سخت بنائے۔ اسی طرح تمام پیشہ ورانہ انجمنوں پر حملے کو باقاعدہ جرم قرار دیا جائے۔ ان کے علاوہ اشاعت کے معاملات میں قیدوبند کو روکنے سے متعلق قانون اور "یونیفارم میڈیا کوڈ" کا ِبل (جس کی تیاری میں جرنلسٹس سنڈیکیٹ بھی شریک ہوئی) جلد از جلد جاری کیے جائیں۔

جرنلسٹس سنڈیکیٹ نے صحافت پر حملے کا مقابلہ کرنے کے لیے متعدد فیصلہ کن اقدامات کا فیصلہ بھی کیا جن میں اہم ترین یہ ہیں : تمام اخبارات سے صحافت پر پابندیوں کے خلاف "یکساں لوگو" شائع کرنے کا مطالبہ ، اشاعت پر پابندی کے خلاف اپیل کے لیے ممکنہ قانونی اقدامات اٹھانا، جرنلسٹس سنڈیکیٹ کے صدر دفتر پر حملے کے واقعے کے حوالے سے تحقیقات کا مطالبہ، سیٹلائٹ چینلوں سے سنڈیکیٹ، صحافت اور میڈیا کے خلاف کارروائیوں کو اجاگر کرنے کا مطالبہ، سنڈیکیٹ پر دھاوے سے متعلق امریکی وزارت خارجہ کے بیان کو مسترد کرنا، مصری وزیر داخلہ کا نام نشر نہ کرنا اور صرف ان کی "نیگیٹو" تصویر پر اکتفا کرنا، وزیر کی برطرفی عمل میں نہ آنے کی صورت میں وزارت داخلہ کی خبروں کا مکمل بائیکاٹ کرنا، وزارت داخلہ کے خلاف قانونی مقدمہ دائر کرنا، آئندہ منگل کے روز کانفرنس کی دعوت جس میں صحافیوں کی عام ہڑتال کے اعلان اور اخبارات کی اشاعت کو بتدریج روک دینے پر غور، آئندہ منگل کے اجلاس تک سنڈیکیٹ کے صدر دفتر میں دھرنا جاری رکھنا، سینئر صحافیوں اور مصنفین کو اپنے مضامین جرنلسٹس سنڈیکیٹ پر دھاوے کے جرم کے لیے مخصوص کرنے کی دعوت دینا، آزادی صحافت کے دشمنوں کی "بلیک لسٹ" تیار کرنا اور ان عناصر کے خلاف قانونی اقدامات کرنا اور صحافتی بحران کی نگرانی کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دینا شامل ہیں۔