.

کئی روز تک جلنے کے بعد، حلب جنگ بندی میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزارت خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب سے شام کے شہر حلب پر فائربندی کا اطلاق ہو گیا ہے، تاہم وزارت خارجہ نے اس جانب اشارہ کیا کہ شہر میں لڑائی کا سلسلہ موقوف نہیں ہوا۔

اس سے قبل امریکا نے اعلان کیا تھا کہ شام میں فائربندی کا دائرہ وسیع کرنے کے حوالے سے روس کے ساتھ اتفاق رائے ہو گیا ہے تاکہ حلب کا زیر محاصرہ شہر بھی اس میں شامل ہو سکے۔ ساتھ ہی اس بات کو بھی باور کرایا گیا کہ امریکی اور روسی فریق نئے احکامات کی نگرانی مضبوط بنانے کے لیے تعاون کر رہے ہیں۔

امریکی وزارت خارجہ نے توقع ظاہر کی ہے کہ روس بشار الاسد پر دباؤ ڈالے گا تاکہ وہ نئی ترتیب کی پابندی کریں اسی دوران امریکا بھی جنگ بندی کی پاسداری یقینی بنانے کے لیے اسی طرح کا معاملہ شامی اپوزیشن کے ساتھ کرے گا۔

ادھر شامی حکومت نے اپنے ذرائع ابلاغ کے ذریعے اعلان کیا ہے کہ وہ حلب شہر میں جمعرات کی صبح سے 48 گھنٹوں کے لیے جنگ بندی کی پابند رہے گی۔