.

شام : حلب کے محاذ پر ایرانی فورسز کو بڑی شکست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی ذرائع ابلاغ نے شام کے قصبے خان طومان اور حلب کے نواحی دیہاتوں میں موجود ایرانی پاسداران انقلاب، ان کے معاون ایرانی فوج کے اسپیشل فورسز کے یونٹ اور شیعہ ملیشیاؤں کے بھاری ہزیمت سے دوچار ہونے کا اقرار کیا ہے۔ مذکورہ علاقے شامی جنگجو گرپوں کے ہاتھوں میں آگئے ہیں جنہوں نے چار اطارف سے علاقے پر حملہ کیا تھا۔

ایرانی نیوز ایجنسی مشرق کے مطابق ایرانی فورسز، شامی فورسز اور ملیشیاؤں کی شکست کی وجہ خان طومان اور خالدیہ کے قصبوں میں موجود فوجی قیادت کی غلطیاں ہیں جنہوں نے زمین میں بارودی سرنگیں نصب نہیں کیں، اس کی وجہ سے حملہ آوروں نے تیزی اور آسانی کے ساتھ پیش قدمی کی۔

ذرائع کے مطابق جیش الفتح اور جیش حُر کے گروپوں نے وہ ہی طریقہ استعمال کیا جو انہوں نے گزشتہ ماہ العیس قصبے پر دھاوا بولتے ہوئے اپنایا تھا جہاں جاسوسی طیاروں کے ذریعے کارروائی کی عکس بندی کرلی گئی تھی۔ اس کے نتیجے میں عسکری قیادت کو لڑائی کی منصوبہ بندی میں مدد ملی۔

شامی ذرائع کے مطابق جمعے کی صبح سے شروع ہونے والے معرکوں میں مختلف شامی مزاحمتی گروپوں کے 43 جنگجو جاں بحق ہوئے۔ ان کے علاوہ میڈیا کے 3 اہل کار بھی اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ اس کے مقابلے میں شامی حکومت کی فوج کے 30 ارکان مارے گئے جب کہ ایرانی فورسز اور ملیشیاؤں کے درجنوں اہل کار زخمی ہوئے اور 5 کو قیدی بنالیا گیا۔ شامی جنگجو گروپ متعدد علاقوں پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔ ان میں خان طومان، خالدیہ، تلہ المقلع، تلہ الزيتون اور تلہ الدبابات شامل ہیں"۔