عراق میں قبیح جرائم.. 50 اجتماعی قبروں کا انکشاف !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراق کے لیے اقوام کے خصوصی ایلچی یان کوبش نے عالمی سلامتی کونسل کو بتایا ہے کہ عراق میں داعش کے زیر کنٹرول مختلف علاقوں میں 50 سے زیادہ اجتماعی قبریں ملی ہیں جن میں تین قبریں رمادی شہر کے ایک فٹ بال گراؤنڈ میں ہیں۔

کوبش کے مطابق داعش کی جانب سے مرتکب "قبیح" جرائم کے ثبوت، شدت پسند تنظیم کے زیرکنٹرول علاقوں کے عراقی فورسز کے ہاتھوں میں دوبارہ واپس آنے پر سامنے آتے جارہے ہیں۔ تاہم کوبش نے ان اجتماعی قبروں اور ان میں لاشوں کی تعداد کے بارے میں تفصیلات نہیں بتائیں۔

یاد رہے کہ الانبار صوبے میں رمادی کے ڈپٹی کمشنر نے 20 اپریل 2016 کو شہر کے جنوب میں تین اجتماعی قبریں ملنے کا اعلان کیا تھا جن میں 30 فوجیوں اور شہریوں کی باقیات تھیں۔

ادھر عراقی وزارت صحت نے مئی 2015 میں اعلان کیا تھا کہ حکام نے تکریت شہر کے بیرونی کناروں پر اجتماعی قبروں سے 470 لاشیں نکالی تھیں، جہاں داعش تنظیم پر متعدد بھرتی اہل کاروں کو ہلاک کرنے کا الزام عائد کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں