غزہ میں سرنگوں کے خلاف کارروائی جاری رکھیں گے:نیتن یاہو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے انتہا پسند وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے غزہ کی پٹی میں حماس کی مبینہ زیر زمین سرنگوں کے خلاف کارروائی جاری رکھنے کی دھمکی دی ہے اور کہا ہے کہ اسرائیل اس سے پیچھے نہیں ہٹے گا۔

انھوں نے اتوار کو کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس کے آغاز سے قبل صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''اسرائیل جنوب میں سرنگوں کا سراغ لگانے اور اس خطرے سے بچنے کے لیے ضروری کارروائی جاری رکھے گا''۔

انھوں نے کہا:''ہم کشیدگی کو بڑھاوا دینا نہیں چاہتے،لیکن سکیورٹی کو برقرار رکھنے کے لیے ہمیں ضروری اقدامات سے روکا بھی نہیں جاسکتا''۔اسرائیل اور غزہ کی پٹی کی حکمراں حماس کے درمیان گذشتہ چار روز سے کشیدگی پائی جارہی ہے۔

اس دوران اسرائیلی فوجیوں اور حماس کے تحت سکیورٹی فورسز کے درمیان سرحد پر جھڑپیں ہوئی ہیں۔اسرائیلی طیاروں نے غزہ کی پٹی میں ہفتے کے روز حماس کی دو تنصیبات پر فضائی حملے کیے تھے اور یہ دعویٰ کیا تھا کہ یہ حملے غزہ سے اسرائیلی علاقے کی جانب راکٹ حملوں کے جواب میں کیے گئےہیں۔تاہم ان فضائی حملوں اور راکٹ باری سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تھا۔ اتوار کی صبح کسی نئے حملے یا سرحدی جھڑپ کی کوئی اطلاع نہیں ملی تھی۔

بدھ کے بعد سے حماس اور دوسری فلسطینی مزاحمتی تنظیموں نے اسرائیلی علاقے کی جانب بارہ مارٹر گولے فائر کیے ہیں جبکہ اسرائیلی فورسز نے غزہ سے اسرائیلی علاقے کی جانب جانے والی سرنگوں کو تلاش کرنے کے بعد انھیں بمباری میں نشانہ بنایا ہے۔جمعرات کو غزہ کے قصبے خان یونس میں اسرائیلی ٹینک کی گولہ باری سے ایک فلسطینی خاتون شہید ہوگئی تھی۔

گذشتہ دو سال کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ اسرائیل اور غزہ کے درمیان کشیدگی پائی جارہی ہے۔غزہ میں حماس کے لیڈر اسماعیل ہنئیہ نے جمعے کو ایک بیان میں کہا تھا کہ ان کی جماعت کوئی نئی جنگ نہیں چاہتی ہے لیکن وہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی دراندازی کو بھی قبول نہیں کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں