شامی فوج نے دیر الزور ہسپتال داعش سے چھڑا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں انسانی حقوق کی صورتحال پر نظر رکھنے والے ایک مانیٹرنگ گروپ نے بتایا ہے کہ بشار الاسد کی حامی فوج نے دیر الزور کے اس ہسپتال کا کنڑول دوبارہ حاصل کر لیا ہے جس پر انتہا پسند تنظیم نے ایک حملے کے بعد چند روز قبضہ کر لیا تھا ۔ حملے میں 35 شامی فوجی ہلاک ہوئے جبکہ داعش نے ہستپال عملے کے بعض افراد کو یرغمال بنا لیا تھا۔

اس کارروائی میں داعش نے فوجی بیس اور ہوائی اڈے کو سپلائی فراہم کرنے والی شاہراہ پر رکاوٹیں کھڑی کر دی تھیں، تاہم لڑائی میں داعش کو 24 جنگجوؤں کی ہلاکت کا نقصان اٹھانا پڑا۔

لندن میں قائم مانیٹرنگ گروپ کے مطابق دیر الزور کے گرد ونواح میں سرکاری فوج اور داعش کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔ کوارڈی نیش کمیٹیوں کے مطابق داعش نے دیر الزور کے فوجی ہوائی اڈے کے ارد گرد بشار الاسد فوج کے ٹھکانوں کا کنڑول حاصل کر لیا تھا۔

اس دوران بشار الاسد فوج کے ہیلی کاپٹروں نے حمص کے شمالی شہر تلبیسہ پر بیرل بموں سے حملہ کیا۔ کوارڈی نیشن کمیٹیوں ہی کے مطابق حلب کے محاذ پر بشار الاسد کی وفادار فضائیہ نے شہر کے مغربی مضافات میں متعدد بلدیہ کمیٹیوں کو نشانہ بنایا جس کی زد میں آ کر بڑی تعداد میں عام شہری ہلاک وزخمی ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں