عراق: "داعش کے سربراہ" کا محافظ ہلاک، قیمتی شکار اتحادی فوج کے ہاتھ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

عراقی کردستان میں انسداد دہشت گردی کی فورس کے ڈائریکٹریٹ جنرل نے اعلان کیا ہے کہ داعش تنظیم میں انٹیلجنس بیورو کے چیف کو کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

ڈائریکٹریٹ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ انٹیلجنس اطلاعات کی بنیاد پر تل عزبہ گاؤں کے نزدیک کارروائی میں داعش تنظیم کے انٹیلجنس بیورو کے چیف اور تنظیم کے سربراہ ابوبکر البغدادی کے محافظ علی الاسود کو دو دیگر بڑے دہشت گردوں کے ساتھ نشانہ بنایا گیا۔ دیگر دو افراد میں تنظیم کے انٹیلجنس بیورو کا نائب چیف ابو عبد الرحمن اور الدبس ضلعے میں تنظیم کا والی قصی الراوی شامل ہیں"۔

دوسری جانب عراق میں مشترکہ آپریشنز کی کمان نے بتایا ہے کہ موصل کے جنوب میں فضائی حملے کے دوران داعش تنظیم کا ایک ذمہ دار ہلاک ہو گیا ہے۔ داعش کے خلاف بین الاقوامی اتحادی افواج کے ترجمان اسٹیو وارن نے عراق میں فضائی کارروائی میں داعش تنظیم کے دو نمایاں رہ نماؤں کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے۔ اس کے علاوہ تنظیم میں کیمیائی ہتھیاروں کے ذمہ دار ابو داؤد کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ ابو داؤد سے ملنے والی اہم معلومات کی بنا پر اتحادی افواج کی جانب سے اس گرفتاری کو قیمی شکار قرار دیا جا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں