یمن : حوثیوں کے خلاف عسکری آپشن کی طرف لوٹنے کا اشارہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

صنعاء میں عوامی مزاحمت کاروں کی سپریم کونسل نے کویت میں موجود یمنی حکومت کے وفد سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مشاورتی مذاکرات سے حتمی طور پر دست بردار ہوجائے۔ کونسل کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی جانب سے ٹال مٹول اور اپنی میدانی پوزیشن کو منظم کرنے کے لیے وقت کے حصول کی پالیسی پر انحصار جاری رکھنے کے سبب مذاکرات کا عمل بے کار ہے۔

کونسل کے ترجمان عبدالله الشندقی نے زور دیا کہ مسئلے کے حل کے لیے جلد از جلد عسکری آپشن کی طرف لوٹا جائے تاکہ معیشت کو مکل طور پر تباہ ہونے سے بچایا جاسکے۔ مقامی کرنسی کی قدر خوف ناک حد تک گر رہی ہے جب کہ اشیاء خورد و نوش اور تیل کی مصنوعات کی قیمتیں آسمان سے باتیں کررہی ہیں۔ اس صورت حال کی ذمہ دار حوثی اور صالح کی باغی ملیشیائیں ہیں۔

یاد رہے کہ کویت میں امن بات چیت کو ناکامی سے بچانے کے لیے انتھک کوششیں کی جارہی ہیں جب کہ دوسری جانب حوثی اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہیں۔ اس دوران یمن کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے حکومتی وفد کو سراہتے ہوئے اس پر زور دیا ہے کہ وہ مزید تحمل کا مظاہرہ کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں