.

مصر: بلیک باکسز کی تلاش کے لیے دو فرموں کی خدمات

غیرملکی فرمیں سمندر کی تہ میں مصری طیارے کے ڈیٹا ریکارڈرز تلاش کریں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی قومی فضائی کمپنی نے بحر متوسط میں گر کر تباہ ہونے والے اپنے مسافر طیارے کے بلیک باکسز کی تلاش کے لیے دو غیرملکی کمپنیوں کی خدمات حاصل کر لی ہیں۔

مصر للطیران کے سربراہ صفوت مسلم نے بدھ کو بتایا ہے کہ ایک فرانسیسی اور ایک اطالوی کمپنی مصری ٹیموں کے ساتھ مل کر سمندر کی تہ میں بلیک باکسز کی تلاش کریں گی۔انھوں نے ان دونوں کمپنیوں کے نام نہیں بتائے۔

اس سے پہلے برطانیہ ،قبرص ،فرانس ،یونان اور امریکا کے بحری جہاز اور طیارے بھی بحر متوسط میں مصری ٹیموں کے ساتھ مل کر تباہ شدہ طیارہ کا ملبہ اور بلیک باکسز تلاش کررہے ہیں۔اب تک انھیں طیارے کے بعض حصے ،کٹے پھٹے انسانی اعضاء اور مسافروں کا سامان ملا ہے۔

مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے تباہ شدہ مسافر طیارے کے بلک باکسز کی تلاش کے لیے ایک آبدوز بھی بھیجی ہے اور یہ سمندر میں تین ہزار میٹر گہرائی تک جا سکتی ہے۔طیارے کے دونوں بلیک باکس ریکارڈرز کے ملنے کی صورت ہی میں حادثے کی اصل وجوہ کا پتا چل سکے گا۔

درایں اثناء مصر کے سرکاری روزنامے الاہرام نے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ پیرس کے چارلس ڈیگال ہوائی اڈے سے اڑان بھرتے وقت مسافر طیارے کو کوئی فنی مسئلہ درپیش نہیں تھا اور طیارے کے پائیلٹ نے ٹیکنیکل لاگ میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہونے کی اطلاع دی تھی۔

مصر کے اس کثیرالاشاعت اخبار نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ مصر للطیران کی پرواز 804 نے گیارہ برقی پیغامات بھیجے تھے۔پہلا گرینچ معیاری وقت کے مطابق 18 مئی کو 2109 جی ایم ٹی پر بھیجا گیا تھا۔پہلے دو پیغامات میں یہ اشارہ دیا گیا تھا کہ انجن ٹھیک طرح سے کام کررہے ہیں۔

تیسرا پیغام 19 مئی کو 0026 جی ایم ٹی پر بھِیجا گیا تھا۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ معاون ہواباز کی کھڑکی میں درجہ حرارت بڑھ گیا تھا۔اس کے بعد طیارے نے تین منٹ تک پیغام بھیجنے کا سلسلہ جاری رکھا تھا اور پھر وہ راڈار سکرین سے اچانک غائب ہوگیا تھا۔

مصر للطیران کا یہ مسافر طیارہ گذشتہ جمعرات کی صبح پیرس سے قاہرہ آتے ہوئے بحر متوسط میں گر کر تباہ ہوگیا تھا۔اس میں سوار تمام 56 مسافر اور عملے کے 10 ارکان ہلاک ہوگئے تھے۔یہ مسافر طیارہ( ائیربس 320 اے) یونانی جزیرے کریٹ اور مصر کی ساحلی پٹی کے درمیان پرواز کے دوران راڈار سے اچانک غائب ہوا تھا۔مصری فوج نے گذشتہ جمعہ کو اس لاپتا مسافر طیارے کا ملبہ ساحلی شہر اسکندریہ سے 290 کلومیٹر شمال میں بحر متوسط سے ملنے کی اطلاع دی تھی۔