عراقی فوج فلوجہ کے مضافات میں پیر جمانے میں کامیاب!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلوجہ کو داعش سے آزاد کروانے کے عراقی آپریشن کے دوران امریکی فضائی حملوں کی مدد سے عراقی فوج فلوجہ کے جنوبی کنارے پر پہنچنے میں کامیاب ہوگئی ہے اور اس نے شہر کی حدود میں واقع ایک پولیس اسٹیشن کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔

برطانوی خبررساں ایجنسی 'رائیٹرز' کے مطابق فلوجہ کے جنوبی ضلع نعیمیہ میں دھماکوں اور فائرنگ کی مسلسل آوازیں آرہی ہیں۔ عراق کے سرکاری ٹی وی کے مطابق ایک ایلیٹ فوجی دستے نے شہر کی حدود کے اندر موجود ایک پولیس اسٹیشن پر قبضہ کرلیا ہے۔

فوجی افسران کے مطابق اس یونٹ نے فلوجہ کی حدود میں ایک میل تک کا سفر کر لیا تھا اور وہ الشہداء کے علاقے سے صرف 500 میٹر کی دوری پر موجود ہیں۔

فلوجہ کی آزادی کے لئے کیا جانے والا یہ آپریشن داعش کے خلاف امریکی، عراقی افواج اور ملیشیائوں کا سب سے بڑا آپریشن بن چکا ہے۔ اس سے پہلے امریکا کی جانب سے 2003ء میں عراق پر حملے کے بعد سب سے زیادہ بڑے معرکے فلوجہ پر قبضہ کرنے کے دوران دیکھنے میں ملے تھے۔

اس کے علاوہ کرد سیکیورٹی فورسز نے بھی اعلان کیا ہے کہ وہ شمالی عراق میں داعش کے خلاف لڑائی کو بڑھاتے ہوئے موصل کے مضافات میں واقع دیہات پر قبضہ کررہے ہیں۔

عراقی فوج کی جانب سے فلوجہ کی آزادی کا آپریشن ایک ہفتہ قبل شروع کیا گیا تھا جس سے قبل چھ ماہ تک شہر کے گرد محاصرہ کو سخت کیا گیا تھا۔

امریکی فوج کے مطابق فلوجہ شہر میں داعش کے 500 سے 700 جنگجو موجود ہیں۔ امریکی اتحاد نے پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران تین فضائی حملے کئے ہیں جن میں داعش کی گاڑیوں، ٹھکانوں اور املاک کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

عراقی افواج نے فلوجہ میں داعش کا آخری سپلائی روٹ بند کردیا

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں