.

لبنانی وزیر داخلہ کا حزب اللہ کو بنکوں کو دھمکیاں دینے پر انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے وزیر داخلہ نہاد مشنوق نے ایران کی حمایت یافتہ طاقتور شیعہ ملیشیا حزب اللہ کو خبردار کیا ہے کہ وہ بنکوں کو ڈرانے دھمکانے سے گریز کرے۔انھوں نے واضح کیا ہے کہ ان کا ملک امریکا کی جانب سے شیعہ ملیشیا کے خلاف عاید ہونے والی پابندیوں کی راہ میں حائل نہیں ہوگا۔

لبنانی وزیر داخلہ کا یہ انتباہ امریکی محکمہ خزانہ کے ایک عہدے دار کی جانب سے گذشتہ ہفتے ایک بیان کے بعد سامنے آیا ہے۔انھوں نے ایک امریکی قانون کے حوالے سے بتایا تھا کہ لبنانی حزب اللہ سے تعلق رکھنے والے ارکان پارلیمان اور وزراء کے علاوہ ان کی مالی مدد کرنے والوں پر پابندیاں عاید کی جاسکتی ہیں اور ان کے اثاثے منجمد ہوسکتے ہیں۔

امریکا نے دسمبر میں ''حزب اللہ عالمی امتناع مالیات ایکٹ'' کی منظوری دی تھی اور اس میں حزب اللہ کی مالی مدد کرنے والے کسی بھی فرد کے خلاف پابندیوں کی دھمکی دی گئی ہے۔

اس قانون کی منظوری کے بعد سے حزب اللہ اور لبنان کے مرکزی بنک کے درمیان تنازعہ پیدا ہوچکا ہے۔اگر حزب اللہ کے وزراء اور ارکان پارلیمان پر امریکا کی جانب سے پابندیاں عاید کی جاتی ہیں تو لبنان کا مرکزی بنک ان پر عمل درآمد کا پابند ہوگا۔