.

بشار الاسد نے عید کی نماز ایک روز قبل ادا کی !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عید الفطر کی نماز کی ادائیگی سے متعلق بشار الاسد کی پہلی وڈیو جاری ہونے کی تاریخ سے انکشاف ہوا ہے کہ شامی صدر نے ایک روز قبل نماز عید ادا کرلی۔ اس روز 5 جولائی تھی نہ کہ 6 جولائی جس کا ان کے میڈیا نے دعوی کیا۔

فیس بک پر شام کے سرکاری سیٹلائٹ نیوز چینل کا پیج ظاہر کررہا ہے کہ بشار الاسد کی نماز عید ادا کرنے کی وڈیو بدھ 6 جولائی نہیں بلکہ منگل 5 جولائی کواپ لوڈ کی گئی۔

اسی طرح ٹوئیٹر پر بھی سیٹلائٹ چینل کے اکاؤنٹ پر وڈیو جاری کیے جانے کی تاریخ 6 جولائی کے بجائے 5 جولائی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ بشار الاسد نے عید کی نماز پورے ایک روز قبل ادا کی جس کا سبب ممکنہ طور پر سیکورٹی وجوہات ہیں۔

بشار الاسد کی نماز عید کی وڈیو میں شامی صدر واضح طور پر بوکھلاہٹ کا شکار دکھائی دیے۔ نماز کا ماحول اور صفوں کی عمل بستگی موقع کی مناسبت سے میل نہیں کھا رہے تھے۔

ہوسکتا ہے کہ بشار الاسد جن کے ہم راہ ان کے مفتی اور وزیر اوقات بھی تھے ، ان کی بوکھلاہٹ کا یہ ہی سبب ہو۔ تمام شخصیات کے چہرے عید کے دن کے روحانی تاثرات سے خالی تھے۔

اس معاملے کی وجہ اب ظاہر ہورہی ہے کہ تمام افراد نے عید کی نماز اپنے مقررہ دن یعنی بدھ 6 جولائی سے ایک روز قبل ادا کی جب کہ یوٹیوب اور ٹوئیٹر پر وڈیو اپ لوڈ کرنے کی تاریخ 5 جولائی ہے۔

قبل از وقت عید کی نماز ادا کرنے کا واحد سبب سیکورٹی وجوہات ہیں جن پر کچھ عرصے سے بشار الاسد نے بہت زیادہ توجہ دینا شروع کردی ہے۔