جازان کے مقابل سعودی فورسز کے حوثیوں پر پیشگی حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی فوج نے جمعرات کے روز یمن کے ساتھ سرحد پر کارروائی کرتے ہوئے یمن کی گورنری حرض کی سمت توپ خانے سے گولہ باری کی۔ کارروائی کا مقصد باغیوں کی جانب سے سرحد کے راستے بالخصوص سعودی صوبے جازان میں دراندازی کی کوششوں کو ناکام بنانا تھا۔ سعودی فورسز نے گزشتہ روز بھی جازان صوبے کے مقابل حرض گورنری میں باغیوں کے کئی ٹھکانوں پر بمباری کی تھی۔

ادھر اتحادی افواج کے طیاروں نے بدھ کے روز میدی کے محاذ پر حوثیوں کی متعدد فوجی گاڑیوں اور مختلف نوعیت کے اسلحے کو تباہ کردیا۔

یمن کی گورنری میدی کے مقابل سرحدی باڑھ سے صرف 400 میٹر کی دوری پر فرنٹ لائن میں موجود العربیہ کے نمائندے نے بتایا کہ حوثی ملیشیاؤں نے ایک پیدل جماعت کے ذریعے دراندازی کی کوشش کی تھی تاہم سعودی فورسز نے ان کو سامنا بمباری کے ساتھ کیا۔

"العربیہ" کے نمائندے نے سعودی رائل نیوی کے میرینز کے زیرانتظام ایک بریگیڈ کا بھی انکشاف کیا جو فرنٹ لائن میں تعینات ہونے کے لیے تیاری کررہا ہے۔ یہ بریگیڈ سعودی عرب اور یمن کے درمیان سرحدی پٹی کی حفاظت کرنے اور پوری پٹی پر پڑاؤ ڈالنے کی ذمہ داری انجام دے رہا ہے۔ نمائندے کے مطابق یہ بریگیڈ جدید ہلکے ہتھیاروں اور جدید ترین جنگی گاڑیوں کے ذریعے مقابلے کی کارروائیاں کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں