شامی کرد فورسز کا داعش کو منبج سے انخلاء کے لیے 48 گھنٹے کا الٹی میٹم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے حمایت یافتہ شامی جنگجوؤں نے داعش کو صوبہ حلب میں واقع شہر منبج سے انخلاء کے لیے 48 گھنٹے کا الٹی میٹم دیا ہے تاکہ شہریوں کی زندگیوں کو بچایا جا سکے۔

کرد اور عرب جنگجوؤں پر مشتمل شامی ڈیمو کریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) کے تحت منبج فوجی کونسل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''یہ داعش کے محاصرہ زدہ جنگجوؤں کے لیے شہر کو خالی کرنے کا آخری موقع ہے''۔

یہ انتباہ امریکا کی قیادت میں داعش مخالف اتحاد کے دو روز قبل منبج کے نواح میں واقع ایک قصبے پر فضائی حملوں کے بعد جاری کیا گیا ہے۔ان حملوں میں چھپن شہری مارے گئے ہیں۔

منبج ترکی کی سرحد کے نزدیک واقع شامی قصبے جرابلس سے داعش کے صدر مقام الرقہ کی جانب جانے والی اہم شاہراہ پر واقع ہے اور اس کی داعش کے لیے بڑی تزویراتی اہمیت ہے۔اس شہر میں شکست کی صورت میں داعش کے شام کے شمال مغربی علاقوں سے پاؤں اکھڑ جائیں گے۔اس لیے وہ اس کے دفاع کی سرتوڑ کوشش کررہے ہیں۔

ایس ڈی ایف نے 31 مئی کو منبج پر چڑھائی کے بعد متعدد نواحی دیہات پر قبضہ کر لیا تھا۔اس دوران ہزاروں شہری جانیں بچا کر محفوظ مقامات کی جانب چلے گئے ہیں۔شہر میں لڑائی کے آغاز کے بعد سے اقوام متحدہ کے انسانی امور کے ادارے نے یہاں سے بے گھر ہونے والے شامیوں کے اعداد وشمار جاری نہیں کیے ہیں۔ البتہ اس نے جون کے آخر میں شہر میں قریباً ساٹھ ہزار افراد کے موجود ہونے کی اطلاع دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں