یمنی باغیوں پرامن عمل میں رکاوٹ ڈالنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے وزیرخارجہ عبدالمک المخلافی نے الزام عاید کیا ہے کہ باغی گروپ اپنی ہٹ دھرمی کے باعث امن مساعی کو آگے بڑھانے میں رکاوٹ پیدا کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت اور باغیوں کے درمیان طے پائے معاہدے کے شرائط پر باغیوں کی جانب سے عمل درآمد میں دانستہ تاخیر کی جا رہی ہے۔

باغیوں نے حراست میں لیے گئے سیاسی کارکنوں، انسانی حقوق کے مندوبین اور صحافیوں کو رہا کرنے کی شرائط پوری نہیں کیں اور نہ ہی تعز شہر میں جنگ سے متاثرہ لوگوں تک امداد کی فراہمی کے لیے محفوظ راستہ فراہم کرنے کے معاہدے پرعمل درآمد کیا ہے۔ یہ تمام اقدامات امن مساعی کو آگے بڑھانے میں رکاوٹ ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق نواکشوط میں عرب وزراء خارجہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے محمد المخلافی کا کہنا تھا کہ حکومت سیاسی بات چیت کو از سرنو بحال کرنا چاہتی ہے۔ بات چیت وہیں سے شروع ہونی چاہئے جہاں ختم ہوئی تھی۔ فریقین میں معاہدے کے لیے خلیجی ممالک کا امن فارمولہ ہی بہترین حل ہے۔ اس کے علاوہ یمنی حکومت یمن میں دیر پا قیام امن کے حوالے سے سلامتی کونسل کی منظور کردہ قراردادوں پرعمل درآمد کا مطالبہ جاری رکھے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں