سعودی عرب : گیس کے کنویں سے امریکی شہری کی بیوی کی لاش برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی دارالحکومت الریاض میں عدالت نے مملکت میں مقیم ایک امریکی شہری کو پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے۔ مذکورہ امریکی پر الزام تھا کہ اس نے اپنی سری لنکن بیوی کو قتل کر کے اس کی لاش الخرج کے علاقے میں آٹھ ماہ تک گیس نکالنے کے لیے مخصوص کنویں کے اندر ایک پائپ لائن میں چھپا دی تھی۔

سعودی روزنامے عکاظ کے مطابق تیل کی ایک بڑی کمپنی کے کاری گروں کو اتوار کی صبح 4:30 پر ایک پائپ لائن کے اندر بیٹھی ہوئی حالت میں ایک لاش ملی۔ اس پائپ لائن کا نگراں ایک امریکی اہل کار ہے جس کی سری لنکن بیوی علاقے سے غائب ہوگئی تھی۔ کاری گروں نے فوری طور پر اپنے نگراں کو اطلاع کی تاکہ ذمہ داران تک اس معاملے کی آگاہی پہنچ جائے تاہم لاش کے بارے میں اطلاع میں دو گھنٹوں کی تاخیر ہوگئی۔ اس کی وجہ لاش کا تجزیہ کیا جانا تھا جس سے ظاہر ہوگیا کہ وہ اس نگراں کی بیوی کی ہے۔

پوچھ گچھ کے دوران ایک کاری گر نے بتایا کہ قاتل نے اس سے لاش کو جلانے یا دفن کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ تاہم اس نے اس کو مسترد کرتے ہوئے نگراں سے مطالبہ کیا کہ وہ ذمہ داران کو آگاہ کردے۔ ایک دوسرے کاری گر کے مطابق نگراں نے انہیں پائپ لائن کی ویلڈنگ اور اس کو بند کرنے کا حکم دیا تھا۔ اس کے بعد اس پائپ لائن کو اپنے گھر کے سامنے رکھنے اور پھر کنویں میں ڈال دینے کا حکم دیا۔ تیسرے کاری گر نے بتایا کہ مجرم کو پائپ لائن کی نگرانی ملنے کے فوری بعد اس کی بیوی غائب ہوگئی تھی۔

ملزم نے ان تمام گواہیوں کو مسترد کرتے ہوئے اقرار کیا کہ لاش اس کی بیوی کی ہے۔تاہم اس نے اپنی بیوی کے قتل سے انکار کردیا۔ عدالت نے ملزم کو پانچ برس قید کی سزا سنائی۔ تاہم مقتولہ خاتون کے (پہلے شوہر سے) بیٹوں نے اس فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے اپنی ماں کے قاتل سے قصاص کا مطالبہ کیا۔ اس لیے کہ گواہان کی گواہی کی روشنی میں اس نے جان بوجھ کر یہ قتل کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں