.

عراق : خودکش بم دھماکے میں 10 افراد کی ہلاکت ،36 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد کے شمال میں واقع قصبے خالص میں ایک چیک پوائنٹ کے نزدیک خودکش بمبار نے اپنی بارود سے بھری گاڑی کو دھماکے سے اڑا دیا ہے جس کے نتیجے میں دس افراد ہلاک اور چھتیس زخمی ہوگئے ہیں۔

صوبے دیالا کے پولیس حکام کے مطابق سوموار کے روز یہ بم دھماکا خالص کے ایک داخلی راستے پر ہوا ہے۔ فوری طور پر کسی گروپ نے اس خودکش بم حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔گذشتہ روز بغداد کے علاقے کاظمیہ میں بم دھماکے میں پندرہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔اس خودکش بم دھماکے کی ذمے داری بھی کسی گروپ نے قبول نہیں کی تھی۔

داعش کے جنگجو عراق کے مغربی صوبے الانبار میں عراقی فورسز کے ہاتھوں پے درپے شکست کے بعد سے بغداد اور دوسرے شہروں میں سکیورٹی فورسز اور اہل تشیع کی آبادی والے علاقوں کو اپنے بم حملوں میں نشانہ بنا رہے ہیں۔

جولائی کے اوائل میں داعش نے بغداد کے علاقے الکرادہ میں بارود سے بھرے ایک ٹرک کو بم دھماکے سے اڑایا تھا جس کے نتیجے میں دو سو بانوے افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ سنہ 2003ء میں امریکا کی عراق پر چڑھائی کے بعد یہ سب سے تباہ کن بم دھماکا تھا۔اس حملے کے چند روز بعد بغداد کے شمال میں واقع شہر بلد میں ایک اور بم دھماکے میں چالیس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔