.

شامی فوج کی حلب کے مشرقی حصے میں مقیم شہریوں کو انخلاء کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی فوج نے شمالی شہر حلب میں باغیوں کے زیر قبضہ مشرقی حصے میں مقیم شہریوں کو ٹیکسٹ پیغام بھیجے ہیں۔ان میں انھیں علاقے سے محفوظ انخلاء کی پیش کش کی ہے۔شامی فوج اور اس کی اتحادی فورسز نے حلب کے مشرقی حصے کا مکمل محاصرہ کررکھا ہے۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کے مطابق فوج نے مکینوں سے کہا ہے کہ وہ ''شرپسندوں'' کو شہر سے نکال دیں اور جو کوئی بھی شہری علاقہ چھوڑنا چاہتا ہے ،اس کو محفوظ راستہ اور عارضی پناہ دی جائے گی۔واضح رہے کہ شام کا سرکاری میڈیا اور حکومت باغی جنگجوؤں کو شرپسند اور دہشت گرد قرار دیتی چلی آرہی ہے۔

ان پیغامات میں مسلح گروپوں سے کہا گیا ہے کہ وہ اپنے ہتھیار ڈال دیں۔شامی فوج نے جولائی کے اوائل میں باغیوں کے زیر قبضہ حلب مشرقی علاقوں کو سامان رسد پہنچانے کے لیے استعمال ہونے والی کاستیلو روڈ کو بند کردیا تھا۔اس کے بعد سے کم سے کم ڈھائی لاکھ افراد محصور ہو کررہ گئے ہیں اور اب ان کے جان ومال کے تحفظ کے حوالے سے تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے۔

شامی فوج روس کی فضائی مدد سے حلب میں باغی گروپوں کے خلاف ایک بڑی کارروائی کررہی ہے اور اس نے حالیہ ہفتوں کے دوران بہت سے علاقوں پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے۔شہر کے مغربی حصے پر شامی فوج کا کنٹرول ہے۔

شامی فوج اور روس کے لڑاکا طیارے باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں پر فضائی حملے کرتے رہتے ہیں۔ انھوں حالیہ مہینوں کے دوران حلب کے گنجان آباد مشرقی حصے میں متعدد اسپتالوں کو بھی فضائی حملوں میں نشانہ بنایا ہے جس سے طبی عملے کے بیسیوں ارکان ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں۔